fbpx

کورونا کی نئی قسم سابقہ ریکارڈ توڑنےلگی

برطانیہ میں کورونا کی نئی قسم ’’ایکس ای‘‘ سامنے آگئی ہے۔اومی کرون سے بھی زیادہ تیزی سے پھیلنے والی کورونا کی نئی قسم سے ہرطرف خوف کی فضا قائم ہے

غیر ملکی میڈیا رپورٹس کے مطابق عالمی ادارہ صحت کورونا کی نئی قسم ایکس ای کے بارے میں جانچ کررہا ہے جس کے بارے میں خیال کیا جارہا ہے کہ یہ BA.2 اومی کرون کے مقابلے میں تقریباً 10 فیصد زیادہ تیز منتقل ہوتی ہے تاہم اس قسم کی مزید تصدیق کی ضرورت ہے۔

رپورٹس کے مطابق برطانیہ میں حکومتی اعدادوشمار کے مطابق 22 مارچ تک ایکس ای کے 637 کیسز سامنے آئے ہیں۔اس کے علاوہ کروونا کی یہ نئی قسم نیوزی لینڈ اور تھائی لینڈ میں بھی پہنچ گئی ہے۔

برطانیہ ہیلتھ سکیورٹی ایجنسی کے مطابق 16 مارچ تک اس کی نمو، BA.2 کی نسبت 9.8 فیصد زائد تھی۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق دوسری جانب فروری کے بعد انگلینڈ اور ویلز میں کووڈ سے اموات کی شرح بلند ترین سطح پر پہنچ گئیں جبکہ 25 مارچ کو ختم ہونے والے ہفتے میں انگلینڈ اور ویلز میں 780 اموات ہوئیں۔اطلاعات کے مطابق اموات کی یہ تعداد گزشتہ ہفتے کی نسبت 14 فیصد زائد ہے۔

ادھر پاکستان میں‌ کورونا کی پانچویں لہر کے وار کم ہونے لگے۔ ملک میں چوبیس گھنٹے کے دوران کورونا وائرس سے 154 مریض متاثر ہوئے۔ پاکستان میں کورونا کے تصدیق شدہ کیسز کی تعداد 15 لاکھ 25 ہزار 466 ہوگئی۔

نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر کے تازہ ترین اعدادوشمار کے مطابق گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران 154 نئے کیسز رپورٹ ہوئے، پنجاب میں 5 لاکھ 5 ہزار 148، سندھ میں 5 لاکھ 75 ہزار 781، خیبرپختونخوا میں 2 لاکھ 19 ہزار 131، بلوچستان میں 35 ہزار 476، گلگت بلتستان میں 11 ہزار 714، اسلام آباد میں ایک لاکھ 35 ہزار 93 جبکہ آزاد کشمیر میں 43 ہزار 277 کیسز رپورٹ ہوئے۔

ملک بھر میں اب تک 2 کروڑ 75 لاکھ 84 ہزار 493 افراد کے ٹیسٹ کئے گئے، گذشتہ 24 گھنٹوں کے دوران 23 ہزار 265 نئے ٹیسٹ کئے گئے، اب تک 14 لاکھ 86 ہزار 191 مریض صحتیاب ہوچکے ہیں جبکہ 320 مریضوں کی حالت تشویشناک ہے۔

پنجاب میں 13 ہزار 558، سندھ میں 8 ہزار 97، خیبرپختونخوا میں 6 ہزار 322، اسلام آباد میں ایک ہزار 23، بلوچستان میں 378، گلگت بلتستان میں 191 اور آزاد کشمیر میں 792 مریض جان سے ہاتھ دھو بیٹھے۔