جاپانی سائنسدان کی حکمت عملی نے جاپان کوکرونا کی تباہ کاریوں سے بچالیا،مگراب ڈرا بھی دیا

ٹوکیو:جاپانی سائنسدان کی حکمت عملی نے جاپان کوکرونا کی تباہ کاریوں سے بچالیا،اطلاعات کے مطابق جہاں ایک طرف جاپان میں دنیا کے دوسرے ممالک کی طرف کرونا وائرس کے پھیلاو کا سلسلہ جاری ہے وہاں جاپان مٰیں اس کے باوجود ہلاکتوں کی تعداد بہت کم ہے

ذرائع کے مطابق اس کے ساتھ ساتھ کرونا وبا کی تباہ کاریوں کے باوجود جاپان میں کرونا لاک ڈاون کا ضرورت پیش نہیں آئی ، جاپان کی اس کامیاب حکمت عملی کے پیچھے دراصل جاپان کے ایک سائنسدان کی فکرکا عمل دخل ہے

معروف عالمی جریدے بلومبرگ کی رپورٹ کے مطابق جاپان کے سائنسدان ہتوشی کی طرف سے تجویزکردہ احتیاطی تدابیر ہیں ، جس کی وجہ سے جاپان بہت بڑے معاشی نقصان سے بھی ابھی بچا ہوا ہے

ذرائع کے مطابق جاپانی سائنس دان ہتوشی اوشیتانی کے "تھری سی” کے نقطہ نظر کو بہت اہمیت دینی چاہیے:اس سائنسدان کے تھری سی منصوبے کے تحت بند جگہوں ، ہجوم والی جگہوں اور قریبی رابطوں سے بچنا جہاں وائرس کی افزائش ہوتی ہے۔

دوسری طرف اس جاپانی سائنسدان ہتوشی نے بلومبرگ کوانٹریودیتے ہوئے کہا ہے کہ انہیں ڈر ہےکہ کہیں جاپانی قوم بے احتیاطی کا شکارہوکربڑے سانحے کا شکارنہ ہوجائے

اس جاپانی سائنسدان کا کہنا ہے کہ وہ یہ سمجھتےہیں کہ جاپانی قوم کا خیال ہےکہ کرونا ان پرشاید زیادہ خطرناک بن کرنہ آئے لیکن ان کویہ پتہ نہیں کہ جیسے جیسے سخت سردی آرہی ہے ، کرونا وائرس کے پھیلاومین اضافہ ہوتا جائے گا کیونکہ اس موسم میں فلو نزلہ زکام کا بڑا اندیشہ ہوتا ہے اوریہی کرونا کے پھیلاو کی بڑی وجوہات میں سے ایک وجہ ہے

بلومبرگ نیوز کو انٹرویو دیتے ہوئے امراض ماہر اوشیتانی نے کہا ، "لوگوں کی تشویش کم ہو رہی ہے۔” ” لیکن حقیقت یہ ہےکہ ہم شدید معاملات اور اموات میں اچانک اضافہ دیکھ سکتے ہیں۔”

بلومبرگ کا کہنا ہےکہ جہاں دنیا میں اس وقت کرونا سے بچاوکےلیے ہاتھ دھونے اورماسک کے پہننے کولازمی قرار دیا جارہا ہے وہاں جاپانی سائنسدان کی تھری سی حکمت عملی بڑی کامیاب ثابت ہوئی

بلومبرگ کوانٹریودیتے ہوئے جاپانی سائنسدان کا کہنا تھا کہ جاپانی قوم احتیاط کا دام ہاتھ سے چھوڑ بیٹھی ہے اورڈر یہ ہے کہ اگراحتیاط نہ برتی گئی تو پھرکرونا کی نئی لہر بہت زیادہ خطرناک ثابت ہوسکتی ہے ،

اس جاپانی سائنسدان نے یہ بھی خبردار کیا ہے کہ اگریہ معاملہ قابو سے باہرہوگیا توپھرجاپان میں بھی بڑے پیمانے پرکرونا کی وجہ سے تباہی پھیلے گی بڑی جانیں ضائع ہوں گی اورجاپان کی معیشت بھی تباہ ہوجائے گی اورپھر اس کے بعد کیا حالات پیدا ہوتے ہیں کچھ نہیں کہا جاسکتا

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.