ورلڈ ہیڈر ایڈ

بھارت:مسلمانوں کے قتل عام اور تشدد کے خلاف مالیگاوں کے 1 لاکھ سے زائد مسلمانو‌ں کااحتجاج

مالیگاﺅں :بھارت میں مسلمانوں کے قتل عام اور تشدد کے خلاف مالی گاوں کے 1 لاکھ سے مسلمان احتجاج کرتے ہوئے سڑکوں پر نکل آئے .مسلمانوں کے پر ہونے والے ظلم و تشدد کو روکا جائے.اب مسلمان ظلم اور تشدد برداشت کرنے کے متحمل نہیں ہیں.اس حوالے سے مالی گاوں کے شہید اسمارک پارک میں بہت بڑا اجتماع ہوا .جس میں مسلمانوں نے ہندو انتہا پسندوں کے ظلم وتشدد کو روکنے کا مطالبہ کردیا .

جمعیت علماءسے منسلک افراد اور کچھ مقامی این جی اوز کی کوششوں سے منعقد اس ریلی کے دوران لوگوں نے اپنی بات سامنے رکھتے ہوئے کہا کہ ”ہم بدلا نہیں چاہتے اور ہم تشدد میں یقین بھی نہیں رکھتے۔ ہم قانون کی حکمرانی پر یقین رکھتے ہیں۔ اس ریلی میں لوگ شہید اسمارک پر جانے سے پہلے مالیگاوں قلعہ میں جمع ہوئے اور وہاں پر جذباتی تقریریں بھی ہوئیں۔ تقریروں میں پولس انتظامیہ اور ریاستی و مرکزی حکومت سے گزارش کی گئی کہ وہ آئین کو مٹی میں نہ ملنے دیں اور شر پسند عناصر پر کنٹرول کریں۔

واضح رہے کہ گزشتہ دنوں جھارکھنڈ میں تبریز انصاری کی بھیڑ نے زبردست پٹائی کر دی تھی جس سے وہ بیہوشی کی حالت میں چلے گئے تھے اور پھر علاج کے دوران ان کی موت واقع ہو گئی تھی۔ تبریز کی اہلیہ نے اس سلسلے میں بتایا کہ 17 جون کی رات اس کا شوہر تبریز انصاری جمشید پور سے گاوں لوٹ رہا تھا جب دھت کیڈیہہ گاوں میں کچھ لوگوں نے انھیں گھیر لیا اور پٹائی شروع کر دی۔ چوری کے الزام میں رات بھر تبریز کو بجلی کے پول سے باندھ کر رکھا گیا اور اس کی بے رحمی سےتشدد کرتے رہے۔ اس دوران اسے ’جے شری رام‘ اور ’جے ہنومان‘ کے نعرہ لگانے کے لیے بھی کہا گیا۔ نعرہ لگانے کے باوجود بھیڑ انھیں پیٹتی رہی۔ صبح نیم مردہ حالت میں تبریز کو پولس کے حوالے کر دیا گیا تھا۔ بعد میں علاج کے دوران اس کی موت ہو گئی تھی۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.