fbpx

دنیاختم ہونےجارہی ہے:کروناجیسےہزاروں وائرس انسانوں میں منتقل ہونےکےلیےتیاربیٹھےہیں:سائنسدانوں کاانتباہ

واشنگٹن:دنیاختم ہونے جارہی ہے: کورونا جیسے ہزاروں وائرس انسانوں میں منتقل ہونےکےلیے بےچین بیٹھےہیں:سائنسدانوں کا انتباہ،اطلاعات کے مطابق ایک طرف دنیا کوکرونا وائرس نے اپنی لپیٹ میں لے لیا ہے تودوسری طرف سائنسدانوں نے خطرے کی گھنٹیاں بجانا شروع کردی ہیں‌

دنیا پہلے ہی کرونا کی لپیٹ میں‌ہے اورتمام حفاظتی تدابیر کے باوجود کرونا سے لاکھوں اموات ہوچکی ہیں ، معیشتیں تباہ ہوچکی ہیں ، ملک مقروض ہوچکے ہیں اورواپسی کی امید کے باوجود معاملہ بگڑتا ہی جارہا ہے اس اثنا میں سائنسدانوں‌کے طرف سے تازہ انتباہ نے دنیا کی چیخیں نکلوا دیں ہیں ،

مستقبل قریب میں کیا ہونے جارہا ہے اوراس حوالے سے ماہرین کیا کہتے ہیں‌ وہ بہت ہی پریشان کن صورت حال ہے، امریکی سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ موجودہ وقت میں نوول کورونا وائرس جانوروں سے انسانوں میں منتقل ہونے والا سب سے نیا پیتھوجن ہے، لیکن اس جیسے ہزاروں وائرس جانوروں میں چھپے ہیں، جو کسی بھی وقت بنی نوع انسان کو ایک نئی عا لمگیر وبا میں مبتلا کرسکتے ہیں۔

امریکی محقیقین نے ایک ایسا نیا آن لائن ٹول تیار کیا ہے، جس میں ایسے وائرس کی ان کی ہلاکت خیزی کے لحاظ سے درجہ بندی کی گئی ہے جو ایک ہی جست میں جانوروں سے انسانوں میں منتقل ہوکر کورونا جیسی تباہی پھیلا سکتے ہیں۔

امریکی سائنسدانوں کی طرف سے اس آن لائن ٹول کو اسپل اوور کے نام سے متعارف کروایا گیا ہے ۔ اس ٹول کو ڈیولپ کرنے والی ٹیم کے سربراہ اور یونیورسٹی آف کیلیفورنیا کے انسٹی ٹیوٹ آف ون ہیلتھ کے محقق زوئے گرینگی بتایا کہ اسپل اوور میں ابتدائی طور پر جانوروں میں موجود ایسے وائرس کی واچ لسٹ تیار کی گئی ہے جن سے انسانی صحت کو شدید خطرات لاحق ہیں۔ یہ ٹول بلامعاوضہ آن لائن دستیاب ہے۔

انہوں نے بتایاہے کہ اس ٹولز کو سائنسداں، پالیسی میکرز اور ماہرین صحت مزید تحقیق کے لئے ترجیحی بنیادوں پر ایسے وائرس پر ریسرچ کے لئے استعمال کر سکتے ہیں۔ اس ٹولز کی بدولت ممکنہ طور پر وبا کا خطرے بننے والے وائرس کی نگرانی کرتے ہوئے قبل از وقت ویکسین بھی تیار کی جاسکتی ہیں۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.