fbpx

پاکستان میں دہشت گردی کے لیے استعمال ہونے والی تین ارب پاکستانی کرنسی پکڑی گئی

اسلام آباد:پاکستان میں دہشت گردی کے لیے استعمال ہونے والی تین ارب پاکستانی کرنسی پکڑی گئی،اطلاعات کے مطابق افغانستان کے ذریعے پاکستان میں دہشت گردی کے لیے جوفنڈنگ ہورہی تھی اس کی بھاری مقدار افغان طلبان کے ہاتھوں‌لگ گئی

 

کابل سے اطلاعات کے مطابق اس وقت جب افغان طالبان بڑی تیزی سے پورے افغانستان پرقبضہ کررہے ہیں اور اہم اہم مقامات پرکنٹرول حاصل کرنے میں کامیاب ہورہےہیں‌، اسی اثنا میں جب افغان طالبان پاکستان کے ساتھ افغان سرحدی علاقوں میں مختلف چیک پوسٹوں پرقبضے کررہے تھے تو ایسا انکشاف سامنے آیا کہ افغان طالبان ششدوحیران رہ گئے

افغان طالبان ذرائع کے مطابق انہوں نے پاکستان کے ساتھ افغان بارڈر کے اندر جب ایک چیک پوسٹ پرقبضہ کیا تو وہ تین ارب پاکستانی روپے دیکھ کرحیران رہ گئے ، افغان طالبان ذرائع کے مطابق اس کرنسی میں پانچ ہزار اورہزار کے نوٹوں کی کے کئی درجن کاٹن پکڑے گئے

ان ذرائع نے یہ بھی دعویٰ کیا ہے کہ یہ کرنسی پاکستان مخالف قوتیں جن میں بھارتی خفیہ ایجنسی را،افغان خفیہ ایجنسی این ڈی ایس ، اسرائیلی خٍفیہ ایجنسی اورامریکی خفیہ ایجنسی سی آئی اے ان دہشت گردوں‌کو معاوضے کے طور دیتی تھی جو پاکستان میں خودکش اوردیگردھماکے کرکے پاکستانیوں کوجان سے مارتے تھے

یہ بھی معلوم ہوا ہے کہ اس چیک پوسٹ کو چھوڑنے سے پہلے افغان کٹھ پتلی کے زیرانتظام پاکستان مخالف خفیہ ایجنسیاں بہت سی رقم جلاتے بھی رہے اوربہت سی رقم اپنے ساتھ واپس بھی لے گئے اورجو نہ لے جاسکے تو ان چیک پوسٹوں پرطالبان کے ہاتھوں لگ گئی

دوسری طرف افغان طالبان اس بات کا بھی جائزہ لے رہے ہیں‌کہ یہ رقم کیسے افغانستان میں پہنچی اوراس کا ذریعہ کیا تھا