fbpx

تحریک لبیک یا رسول اللہ کا واہگہ بارڈر کی طرف مارچ کا اعلان

تحریک لبیک یا رسول اللہ کا واہگہ بارڈر کی طرف مارچ کا اعلان
تحریک لبیک یا رسول اللہ صلی اللہ علیک وسلم کے سربراہ اور تحریک صراط مستقیم کے رہبر ڈاکٹر محمد اشرف آصف جلالی کی اپیل پر 5 فروری کو ”یوم یکجہتی کشمیر“ بڑے جوش و جذبہ سے منایا جائے گا۔ آزاد کشمیر سمیت ملک کے طول و عرض میں کشمیری مسلمانوں سے اظہار یکجہتی کے لیے تقریبات کا انعقاد کیا جائے گا۔

لاہور میں قائد اعظم انٹر چینج سے واہگہ بارڈر کی طرف ”صدائے کشمیر مارچ“ کیا جائے گا۔ مارچ کی قیادت تحریک لبیک یا رسول اللہﷺکے مرکزی چیئرمین ڈاکٹر مفتی محمد اشرف آصف جلالی اور تحریک لبیک اسلام کے سربراہ صاحبزادہ محمد امین اللہ نبیل سیالوی کریں گے۔

5 فروری کی رابطہ مہم کے سلسلہ میں ڈاکٹر محمد اشرف آصف جلالی نے گفتگو کرتے ہوئے کہا: امریکہ،اسرائیل اور انڈیا کا اتحاد پاکستان کے لئے بہت بڑا چیلنج ہے۔جتنا کشمیر آزاد ہوا وہ جہاد کی وجہ سے آزاد ہوا، آج باقی کشمیر بھی جہاد ہی کی برکت سے آزاد ہو گا۔ پاکستانی حکمرانوں کو کشمیر کی آزادی اور بھارت کی دوستی دونوں میں سے ایک کا انتخاب کرنا ہوگا۔ کشمیر کی آزادی میں ایک بہت بڑی رکاوٹ منافقانہ رویہ ہے۔بھارتی مظالم سے جنت نظیر مقبوضہ وادی ٹارچر سیلوں،گمنام قبروں اور شہداء کے مدفن کی سرزمین بن چکی ہے۔بھارت کے جنگی جنون نے پورے خطے میں عدم استحکام پیدا کر دیا ہے۔ ”یوم یکجہتی کشمیر“ کے موقع پر پاکستان کا بچہ بچہ اپنے کشمیری بھائیوں کے ساتھ اظہار یکجہتی کے لیے برسرمیدان نکلے گا۔کشمیر پاکستان کے ڈی این اے میں ہے، اسے بھلایا نہیں جا سکتا۔آسمان کی بلندیوں کو چھوتے ہوئے کشمیریوں کے جذبہ حریت نے بھارت پر لرزہ طاری کر دیا ہے۔کشمیر کے مطلع پر شہداء کشمیر کی سرخی آزادی کے سورج کے طلوع ہونے کی خبر دے رہی ہے۔بھارتی فوج کا اپریشن آل آؤٹ بھی اپنے حد درجے کے ظلم و ستم کے باوجود بھی کشمیر میں آزادی کی لہر دبانے میں ناکام ہے۔اب نظر آرہا ہے کہ کشمیریوں کو طاقت کے استعمال سے مزید دبانا بھارتی حکومت کے بس میں نہیں رہا۔