fbpx

آج دنیا بھرمیں مردوں کا عالمی دن منایا جارہاہے،اس کے باوجود مرد مسائل کا شکارہیں:دیکشا گروور چلانہ

لاہور:آج دنیا بھرمیں مردوں کا عالمی دن منایا جارہاہے،اس کے باوجود مرد مسائل کا شکارہیں:اس حوالے سے مردوں کی جسمانی اور ذہنی صحت کے حوالے سے ماہرخاتون دیکشا گروور چلانہ کہتی ہیں کہ اس دن کے منانے کا مقصد تو تھا کہ مردوں کی صحت،ان کی ضروریات ، ان کے احساسات اور ان کے جزبات کا خیال رکھا جاتا مگرہمارے ہاں معاملات بالکل الٹ ہیں

ماہرخاتون دیکشا گروور چلانہ کہتی ہیں کہ اس وقت 90 فیصد ایسے مرد بھی معاشرے میں موجود ہیں کہ جن کودوسروں کی مدد کی ضرورت ہوتی ہے لیکن ان کو کوئی پوچھتا تک نہیں ،ان کی مالی مدد ہونی چاہیے تھی لیکن کوئی نہیں کررہا ہے ، شاید یہی وجہ ہے کہ وہ گھروں میں محصور ہیں اور اپنے خیالات اور جزبات کسی تک شیئر نہیں کرسکتے

ماہرخاتون دیکشا گروور چلانہ کا کہنا تھا کہ اس وقت صورت حال ہے کہ مردوں کی بڑی تعداد شوگر،کینسر اور دیگر کئی دوسری موذی بیماریوں میں مبتلا ہیں اور ان کے پاس ایسا کوئی ذریعہ نہیں کہ وہ اپنی صحت کے حوالے سے کچھ کرسکیں

بھارت میں تو ایسی ہزاروں مثالیں ہیں‌کہ مرد خودکشیوں پر مجبور ہیں ، مگرحکمران ہیں کہ جن کو پرواہ تک نہیں اور وہ اپنے مردوں کے خیالات ، ان کے احساسات اور ان کے جزبات کااحترام نہیں کرتے ، ہے تو یہ مردوں کا عالمی دن مگرہمارے مرد اب بےچارگی کی زندگی گزار رہے ہیں‌،مگرکب تک

دیکشا گروور چلانہ کہتی ہیں‌کہ مَردوں کا عالمی دن منانے کا مقصد ہے کہ مرد بھی اپنی صحت پر ذرا توجہ دیں۔ حالیہ کچھ برسوں میں مَردوں میں ذہنی مسائل کے باعث خودکشی کے رجحان میں اضافہ ہوا ہے، جن کی زیادہ تر تعداد 45 برس سے کم عمر کے مردوں کی ہے۔

مرد خواتین کے مقابلے میں ہائی بلڈ پریشر، ہارٹ اٹیک، پھیپھڑوں کے امراض، منہ کا کینسر اور پروسٹیٹ کینسر کا شکار زیادہ ہوتے ہیں۔

 

ماہرین نفسیات کا کہنا ہے کہ مرد کو چاہیے کہ اپنی پریشانیوں سے متعلق اہل خانہ سے بات کریں،

یاد رہے کہ مردوں کا عالمی دن ہر سال19 نومبر کو منایا جاتا ہے۔یہ دن پہلی مرتبہ 19 نومبر 1999 کو منایا گیا تھا۔ صنفِ نازک کے حقوق کیلئے یوں تو ہرسال 8مارچ کو خواتین کا عالمی دن جوش و خروش سے منایا جاتا ہے۔ تاہم، مردوں کے عالمی دن کو اتنی اہمیت نہیں دی جاتی۔ اس دن کو منانے کا مقصد معاشرے میں مردوں کے مثبت کردار اور ان کو لاحق مسائل کے تئیں بیداری لانا ہے۔ یہ دن اس بات پر زور دیتا ہے کہ مرد خود اور اپنے زیر تربیت نوجوانوں کو مرد ہونے کی حیثیت سے ان کی ذمہ داریاں ، مثبت کردار اور اقدار کے بارے میں سکھائیں ۔ اس دن اس بات پر بھی گفتگو کی جاتی ہے کہ مردوں کو بھی ذہنی مسائل لاحق ہوسکتے ہیں جس کی وجہ خودکشی کا رجحان فروغ پا رہا ہے۔

19نومبر کو مردوں کو اس بات کی بھی ترغیب دی جاتی ہے کہ وہ اپنے جذبات کو چھپانے کے بجائے ان کا اظہار کریں تاکہ ان کے ذہنی مسائل میں کمی آسکے۔ماہرین کا کہنا ہے کہ ۵؍ بیماریاں ایسی ہیں جو خواتین کی نسبت مردوں کو اپنا زیادہ شکار بناتی ہیں ۔ ان میں ہائی بلڈ پریشر، ہارٹ اٹیک، پھیپھڑوں کے امراض، منہ کا کینسر اور پروسٹیٹ کینسر شامل ہیں ۔ ضرورت اس بات کی ہے کہ ہم اپنے اطراف موجود مردوں کی ضروریات اور ان کے احساسات کا خیال کریں ۔ان سے بات چیت کر کے انہیں قائل کریں کہ بحیثیت مرد ضروری نہیں ہے کہ وہ اپنے جذبات چھپائے رکھیں اور حالات کا جبر تنہا جھیلتے رہیں

پاک فوج ملکی سلامتی کی ضامن۔ شہدا کی قربانیوں پر فخر
پاکستانی طلبا و طالبات نے 14 ممکنہ نئے سیارچے دریافت کرلیے
ہمت ہے تو کھرا سچ کا جواب دو، پروپیگنڈہ مبشر لقمان کو سچ بولنے سے نہیں روک سکتا