جاپان : ٹوکیو میں ہیٹ ویو کا 150 سالہ ریکارڈ ٹوٹ گیا

0
100

جاپان کا دارالحکومت ٹوکیو ان دنوں شدید گرمی کی لپیٹ میں ہے یہاں تک کہ شہر میں ہیٹ ویو کا 150 سالہ ریکارڈ ٹوٹ گیا ہے۔

باغی ٹی وی: "الجزیرہ” کے مطابق ٹوکیو میں لگاتار تین دن درجہ حرارت 35 ڈگری سینٹی گریڈ تک پہنچ گیا،جو 150 سالوں میں جون کے مہینے میں گرم موسم کا بدترین سلسلہ تھا۔

ملک بھر میں موسم کی صورتحال

لگاتار تین دن درجہ حرارت 35 سینٹی گریڈ تک پہنچنے کے بعد منگل کو ٹوکیو میں 36 سینٹی گریڈ درجہ حرارت پہنچنے کی پیش گوئی کی گئی تھی،1875 کے بعد یہ جون میں گرمی کا بدترین سلسلہ ہے۔

مقامی میڈیا کے مطابق اتوار کے روز ہیٹ ویو سے متاثرہ 250 سےزائد شہریوں کو اسپتال منتقل کیا گیا جبکہ کم از کم دو افراد ہیٹ اسٹروک سے ہلاک ہوئے جبکہ منگل کو مقامی وقت کے مطابق صبح 9 بجے تک مزید 13 افراد کو اسپتال میں داخل کیا گیا تھا۔

دوسری جانب حکام نے ٹوکیو میں شہریوں سے کہا ہے کہ وہ پاور کٹ ہونے سے بچنے کے لیے بجلی محفوظ کریں جبکہ یہ بھی اطلاعات ہیں کہ ٹوکیو میں آئندہ دنوں کے اندر درجہ حرارت میں مزید اضافہ بھی ہوسکتا ہے۔

ذوالحج کا چاند دیکھنے کیلیے مرکزی رویت ہلال کمیٹی کا اجلاس آج ہوگا

جاپان کے بیشتر حصوں میں عام طور پر سال کے اس وقت بارش کا موسم ہوتا ہے، لیکن جاپان کی موسمیاتی ایجنسی (JMA) نے پیر کے روز کانٹو کے علاقے، ٹوکیو کے گھر، اور پڑوسی کوشین کے علاقے میں موسم ختم ہونے کا اعلان کیا۔ 1951 میں ریکارڈز شروع ہونے کے بعد سے یہ سیزن کا ابتدائی اختتام تھا لیکن معمول سے مکمل 22 دن پہلے۔

جے ایم اے نے وسطی جاپان کے ٹوکائی اور جنوبی کیوشو کے کچھ حصے میں بھی بارش کے موسم کے خاتمے کا اعلان کرتے ہوئے کہا کہ اس سال ان علاقوں میں بارش کا موسم تھا اور کانٹو کوشین ریکارڈ پر سب سے کم بارش تھی۔

شدید گرمی کے درمیان، جاپانی حکومت نے بجلی کے بحران کے بارے میں ایک انتباہ جاری کیا ہے، حکام نے منگل کو ٹوکیو کے علاقے میں صارفین سے دوسرے دن بجلی بچانے کے لیے کہا ہے۔ لیکن انہوں نے مزید کہا کہ رہائشیوں کو وہ کرنا چاہیے جو ٹھنڈا رہنے اور ہیٹ اسٹروک سے بچنے کے لیے ضروری تھا۔

آٓئی ایم ایف سے 1.9 ارب ڈالر بہت جلد ملیں گے لیکن بوجھ عوام کو ہی اٹھانا ہوگا. وزیراعظم

Leave a reply