fbpx

ٹرین حادثہ،ریسکیو،ریلیف آپریشن مکمل ،ڈی جی آئی ایس پی آرنے بتائیں مزید تفصیلات

ٹرین حادثہ،ریسکیو،ریلیف آپریشن مکمل ،ڈی جی آئی ایس پی آرنے بتائیں مزید تفصیلات

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق گھوٹکی ٹرین حادثے کے بعد ریسکیو و ریلیف آپریشن مکمل ہو چکا ہے

ڈی جی آئی ایس پی آر کے مطابق ریلوے ٹریک پر بحالی کا کام جاری ہے۔ ٹرین سے انجن کی بوگیاں ہٹا دی گئی ہیں ۔ ضروری مرمت و بحالی کے بعد ریلوے ٹریک کو کھولنے کی کوششیں جاری ہیں۔ ڈی جی آئی ایس پی آر کے مطابق شیخ زید اسپتال رحیم یار خان اور سی ایم ایچ پنو عاقل سمیت مختلف اسپتالوں میں 98 زخمیوں کو منتقل کیا گیا ہے جن کا علاج معالجہ جاری ہے

دوسری جانب ٹرین حادثے میں جاں بحق ہونے والے افراد کے نام سامنے آئے ہیں جاں بحق افراد میں لاہورکے احمد ولد محمد رمضان، ننکانہ صاحب کے عاطف شہزاد ولد عاطف لطیف، راولپنڈی کے رب نواز ولد سجاول شاہ، خوشاب کے قیصر اقبال ولد ظفر اقبال اور رحیم یارخان کی دعا فاطمہ ولد شہزاد، لودھراں کی مائی سائرہ ولد شہزاد، شہروز ارشد ولد ارشد، مقدس ولد عمران، محمد اسلم ولد محمد یاسین، شبرین ولد محمد یاسین روبینہ، محمدعلی اور لودھراں کے سمیع اللہ ولد ابراہیم، ٹوبہ ٹیک سنگھ کی طاہرہ پروین، مومنہ ولد میاں رازق، محمد چاند ولد رزاق، فیصل آباد کی مس عالم ولد صداقت، وہاڑی کے محمد انور ولد عبدالحفیظ،حریم اورشہلا ولد حضورخان اور کراچی کے خالد بن ولید شامل ہیں

ٹرین حادثے میں 2 ریلوے اور 2 پولیس اہلکار بھی جاں بحق

 حادثے کا شکار ہوئی ٹرین سرسید ایکسپریس کے ڈرائیور اعجاز احمد کا حادثے کے بارے انکشاف

ایک اورتیز گام ٹرین حادثے کا شکار

ٹرین حادثہ، تین بوگیوں میں کتنے مسافر سوارتھے؟ بکنگ کس نے کروائی؟ اہم خبر

ٹرین حادثہ،بوگیوں میں پھنسے مسافروں کو نکالنے کا عمل جاری

ٹرینوں کا شیڈول متاثر،ہلاکتوں پر دل انتہائی رنجیدہ،وفاقی وزیر ریلوے بھی بول پڑے

ملت ایکسپریس میں کراچی سے روانگی کے وقت کتنے مسافر سوار تھے؟

ٹرین حادثہ، ن لیگ نے قومی اسمبلی میں بڑا قدم اٹھا لیا

حادثہ کا ذمہ دار وزارت ریلوے نہیں، ریلوے حکام نے ہاتھ کھڑے کر دیئے

واضح رہے کہ گزشتہ روز ٹرین حادثہ ہوا تھا جس میں پچاس سے زیادہ اموات ہو چکی ہیں، حادثہ کے بعد ایمرجنسی نافذ کر دی گئی تھی جس کے بعد پاک فوج، رینجرز سمیت دیگر ادارے ریسکیو و ریلیف کے لئے موقع پر پہنچے، شدید زخمیوں کو طبی امداد کے لئے ہیلی کاپٹر پر ہسپتالوں میں منتقل کیا گیا، پنجاب کے ضلع رحیم یار خان میں بھی زخمیوں کو منتقل کیا گیا اور انکا علاج معالجہ کیا گیئا