ٹرمپ کے اعلان نے بھارت کیلئے مشکل کھڑی کر دی، مودی امریکہ کب جائیں گے؟ اہم خبر

امریکی صدر ٹرمپ کی طرف سے مسئلہ کشمیر پر ثالثی کے اعلان سے بھارتی حکومت اور متعصب ہندوستانی میڈیا کیلئے ایک نئی مشکل کھڑی ہو گئی ہے،

آپ نے پاکستان کی امداد بند کی کیا آپ یہ بحال کر دیں گے؟ صحافی کے سوال پر ٹرمپ نے دیا یہ جواب

عمران خان کی ٹرمپ سے تاریخی ملاقات، مسئلہ کشمیر پر ثالثی کی پیشکش کا خیر مقدم

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق ماضی میں امریکہ سمیت کئی ملکوں کی جانب سے مسئلہ کشمیر پر ثالثی کی پیش کش کی جاتی رہی ہے تاہم انڈیا نے ہمیشہ ثالثی کی پیشکش قبول کرنے سے انکار کیا ہے تاہم اب امریکہ صدر ٹرمپ جن سے تعلقات کا ہندوستانی وزیر اعظم نریندر مودی بھی دم بھرتے ہیں، نے واضح طور پر یہ بھی کہہ دیا ہے کہ بھارتی وزیر اعظم نریندر مودی نے بھی ان کے ساتھ بات کی ہے کہ وہ مسئلہ کشمیر حل کرنے کیلئے ثالثی کا کردار ادا کریں،

عمران خان پاکستان کے مقبول ترین وزیر اعظم، دورہ کی دعوت ملی تو پاکستان جاؤں گا، ٹرمپ

ٹرمپ کے اس بیان کے بعد ہندوستانی وزیر اعظم نریندر مودی جو رواں‌ برس ستمبر میں امریکہ کے دورہ پر جا رہے ہیں، ان کیلئے سخت امتحان ہے کہ وہ ٹرمپ کے اس بیان پر امریکی صدر کو جھوٹا قرار دیتے ہیں یا وہ اس بات کو قبول کرتے ہیں کہ انہوں نے دو ہفتے قبل امریکی صدر کو فون کر کے مسئلہ کشمیر پر ثالثی کروانے کیلئے کہا ہے، ٹرمپ کی طرف سے ثالثی کے اعلان پر ہندوستانی میڈیا بھی بوکھلاہٹ کا شکار ہے اور یہ بات واقعتا انڈین میڈیا کیلئے سرپرائز ثابت ہوئی ہے.

ٹرمپ سے ملاقات کے دوران وزیر اعظم عمران خان نے بھی مسئلہ کشمیر کے حوالے سے بات کی اور کہا کہ اس کی وجہ سے اربوں لوگوں کی زندگیاں داﺅ پر لگی ہوئی ہیں جبکہ امریکی صدر نے بھی ثالثی کی پیش کش کی اور کہا کہ وہ اس مسئلہ کے حل کیلئے کردار ادا کرنے کے خواہشمند ہیں،

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.