fbpx

تُرک ڈراموں سے ہماری ڈرامہ انڈسٹری بہت بہتر ہوئی ہے سمیع خان

پاکستانی اداکار سمیع خان نے کہا ہے کہ غیر ملکی ڈراموں سے ہمیشہ ہماری انڈسٹری کو فائدہ ہوالہٰذا ہمیں ان کی نشریات جاری رکھنی چاہیے۔

باغی ٹی وی :اداکار سمیع خان نے اپنے بھائی تیفور خان کے ہمراہ ایک نجی ٹی وی چینل کے شو میں شرکت کی اور مختلف سوالوں کے دلچسپ جواب دیئے-

میزبان نے دورانِ شو اداکار سمیع خان سے سوال کیا کہ کیا آپ پاکستان میں تُرک ڈراموں کی نشریات کے خلاف ہیں؟-

سمیع خان نے میزبان کے سوال کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ ہاں! اگر ان ڈراموں کو درست طریقے سے امپورٹ نہیں کیا جائے تو میں ضرور اُن کی نشریات کے خلاف ہوں گا۔

اداکار نے کہا کہ جب ہم باہر سے کوئی گاڑی وغیرہ درآمد کرتے ہیں تو اس بات کا ضرور خیا ل رکھتے ہیں، اس کی درآمد سے مقامی انڈسٹری کو نقصان نہیں پہنچنا چاہیے، اسی طرح غیر ملکی ڈراموں سے ہماری انڈسٹری کو بھی نقصان نہیں پہنچنا چاہیے۔

سمیع خان نے کہا کہ اگر غیر ملکی ڈراموں سے ہمیشہ ہماری انڈسٹری کو فائدہ ہوا ہے غیر ملکی ڈرامے معیاری ہیں تو اُنہیں لازمی پاکستان میں نشر کیا جائے، اس سے ہماری انڈسٹری کو فائدہ ہوگا۔

سمیع خان نے ترک ڈراموں کے حوالے سے کہا کہ تُرک ڈراموں سے بھی ہماری ڈرامہ انڈسٹری بہت بہتر ہوئی ہے لہٰذا ہمیں ان کی نشریات جاری رکھنی چاہیے اسلامی فتوحات پر مبنی شہرہ آفاق تُرک سیریز بہترین ڈرامہ ہے۔

واضح رہے کہ مسلمانوں کی اسلامی فتوحات پر مببی ترک ڈرامہ سیریز ارطغرل غازی کو وزیراعظم پاکستان عمران خان کی ہدایت پر اردو میں ڈب کر کے سرکاری ٹی وی پر نشر کیا جا رہا ہے ڈرامے کو پاکستان میں بے حد پذیرائی ملی ڈرامے اور کرداروں نے پاکستان میں غیر معمولی مقبولیت حاصل کی اور کئی ایک اعزا اپنے نام کئے –

جہاں ڈرامے کو عوام کی جانب سے پسند کیا گیا وہیں شوبز شخصیات بھی منقسم نظر آئیں بعض شوبز شخصیات نے ترک ڈرامہ سیریل کو پسندیدہ اورپاکستان میں خوش آئند قرار دیا جبکہ بعض اداکاروں نے ڈرامےے کو پاکستان بالخصوص پی ٹی وی پر نشر کرنے کی بھر پور مخالفت کی جس کی وجہ سے انہیں شدید تنقید کا بھی سامنا رہا جن میں سر فہرست یاسر حسین اور اداکار شان ہیں-