ورلڈ ہیڈر ایڈ

شدید برف باری اورموسلا دھار بارش دوافراد ہلاک

جموں :،سخت سردی اور برف باری وادی کشمیرکے حصے میں آنے والا قدرتی ایک موسم ہے ، یہ سخت سردی اور برف باری ہر سال ہوتی ہے لیکن یہ جاری سال اس حوالے سے پچھلے سالوں سے مختلف ہےکہ برف باری اور بارش کے دوران بھارتی افواج کے آپریشن جاری ہیں اور کشمیر پہلے ہی ایک مشکل صورت حال سے گزررہے ہیں،

کرتارپورپاکستانی سازش اورپروپیگنڈا ہے، بھرپورمقابلہ کیا جائے گا: بھارت کی ہرزہ سرائی

اطلاعات کے مطابق سرما کی آمد کے ساتھ ہی مقبوضہ کشمیر کے بالائی علاقوں میں برفباری ہوئی ہے جبکہ گزشتہ شب سے ہی پورے خطے میں لگاتار بارش برس رہی ہے جس سے وادی کشمیر میں سردی میں اضافہ ہوا ہے۔وادی کشمیر کے بالائی علاقوں کے ساتھ ساتھ اب میدانی علاقوں میں بھی رات سے بھاری برف باری کا سلسلہ جاری ہے۔جبکہ دو افراد برفانی طوفان کی زد میں آکر ہلاک ہوگئے۔

بے بی کون؟ بلاول یا سینیٹر فیصل جاوید، سینیٹ میں‌ دلیلیں اورتاویلیں، دلچسپ کارروائی

انتظامیہ کے مطابق برف باری کے سبب جموں سرینگر قومی شاہراہ کو آمد رفت لے لیے بند کر دیا گیا اور سرینگر ائیرپورٹ سے جانے والی پروازوں کو بھی منسوخ کیا گیا ہے۔ساؤتھ ایشین وائر کی اطلاعات کے مطابق برف باری کے سبب کشمیر یونیورسٹی کی طرف سے لیے جانے والے تمام امتحانات کو ملتوی کردیا گیا ہے۔

ذرائع کے مطابق گزشتہ روز وادی کشمیر کو جموں خطے سے ملانے والی متبادل مغل شاہراہ، پیر کی گلی پر تازہ برفباری اور بارشوں کے باعث شاہراہ کو ٹریفک کی آمد رفت کے لیے بند کردیا گیا۔ جموں و کشمیر کے بالائی علاقوں بشمول گلمرگ میں بھی برف باری ہوئی ہے۔گلمرگ میں اب تک تقریبا ایک فٹ برف جمی ہوئی جبکہ قریبی افروٹ پہاڑی اور اس سے منسلک دیگر چھوٹی پہاڑیوں پر ایک فٹ سے زیادہ برفباری ہوئی ہے۔

ظلم کی انتہا، فلسطینی بچے کے سامنے اس کے والد پر تشدد،وائرل ویڈیونے جھنجھوڑ کررکھ دیا

کشمیر کے سیاحتی مقام گلمرگ، سونہ مرگ، پیر کی گلی، گریز، زوجیلا، کے علاوہ پیر کی گلی، دھوبی جن، اور کپوارہ کے بالائی علاقوں میں دوران شب ہی برفباری کا سلسلہ شروع ہوا، جس کے سبب پوری وادی میں سردی کی شدت میں اضافہ ہوا ہے۔کشمیر میں موسلا دھار بارشکرگل، لداخ، لیہہ، گلمرگ میں درجہ حرارت نقطہ انجماد سے نیچے چلا گیا ہے۔محکمہ موسمیات کے مطابق پورے خطے میں گزشتہ شب یعنی پانچ تاریخ سے ہی موسم خراب ہوا اور آٹھ تاریخ تک بارشوں کا سلسلہ چلتا رہے گا۔

اس دوران گلمرگ، سونہ مرگ، پیر کی گلی، کپوارہ وغیرہ کے بالائی علاقوں میں مزید برفباری ہوگی جبکہ وادی میں بارش وقفے وقفے سے ہوتی رہے گی۔ محکمہ کی جانب سے اس ضمن میں صوبائی انتظامیہ کو آگاہ کیا گیا ہے ساتھ ہی مشاورت بھی جاری کی گئی ہے۔محکمہ کے ڈپٹی ڈائیریکٹر محمد اقبال نے بتایا کہ موسم کے بارے میں محکمہ کی جانب سے پہلے ہی کشمیر، لیہہ اور لداخ کی انتظامیہ کوالرٹ جاری کیا گیا ہے۔ رواں موسم میں بارش اور برفباری عام ہے اور اس میں سردی کی شدت میں بھی مزید اضافہ ہوگا۔سردی میں اضافے سے اکثر لوگ گھروں میں ہی بیٹھنے کو ترجیح دے رہے ہیں جبکہ گرم ملبوسات کو استعمال کیا جا رہا ہے۔

کئی علاقوں میں ابھی تک درختوں سے سیب نہیں توڑے گئے ہیں اور موسم مزید خراب ہونے کی صورت میں انہیں نقصان اٹھانا پڑ سکتا ہے۔گزشتہ برس بھی نومبر کے پہلے ہفتے میں برفباری ہوئی تھی جس کی وجہ سے میوہ باغات خصوصا سیب کے درختوں کو شدید نقصان ہوا تھا۔

جموں و کشمیر کے ضلع کپواڑہ کے ذرہامہ گجر پتی علاقے میں فوج کے ساتھ کام کرنے والے دو پورٹر ہلاک ہوگئے۔دونوں افراد برفانی طوفان کی زد میں آکر ہلاک ہوئے، لیکن حکام نے اس بات کی تصدیق ابھی نہیں کی ہے دونوں کی موت کیسے واقع ہوئی ہے۔ حکام کا کہنا ہے کہ دونوں افراد یا تو برفانی طوفان کی زد میں آگئے یا جانوروں نے انہیں کھایا ہے۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.