fbpx

سعودی عرب اور عرب امارات کو منہ کی کھانی پڑی ، اقوام متحدہ نے قطر کے خلاف اعتراضات مسترد کردیئے

نیویارک :اقوامِ متحدہ کی کمیٹی نے اپنے 99ویں اجلاس کے اختتام پر قطر کی جانب سے سعودیہ اور یو اے ای کے خلاف دائر بین الاقوامی رابطوں پردرخواست پر دونوں ممالک کے اعتراضات کو مسترد کردیا۔ سی ای آر ڈی ایسے آزاد ماہرین پر مشتمل تنظیم ہے جو اپنے ریاستی اراکین کی جانب سے ہر قسم کے تعصب کے خاتمے کے حوالے سے موجود بین الاقوامی قراردادوں پر عملدرآمد کی نگرانی کرتی ہے۔

ذرائع کے مطابق اس سلسلے میں جینیوا میں مئی 2018 کے دوران ہونے والی سماعتوں اور تحریری جوابات کے بعد کمیٹی اس نتیجے پر پہنچی کہ سعوی عرب اور یو اے ای کے اعتراضات تسلیم نہیں کیے جاسکتے۔چنانچہ کمیٹی نے کہا کہ وہ فریق ریاستوں کی جانب سے اٹھائے گئے اعتراضات کو مسترد کرتی ہے‘ اور کیسز کے میعار کا جائزہ لینے کے لیے عارضی بنیادوں پر قائم کیے گئے 2 مشاورتی کمیشن تعینات کرتی ہے۔

ذرائع کے مطابق قطر نے یہ اقدام سعودی عرب اور یو اے ای کی جانب سے 5 جون 2017 کو اس کے خلاف نافذ کردہ اقدامات کے سلسلے میں اٹھایا، جس میں قطر کا سیاسی اور اقتصادی بائیکاٹ کرتے ہوئے سمندری، فضائی اور زمینی رابطے منقطع کردیے گئے تھے۔

عرب ہمسائیہ ممالک کی طرف سے قطر کی ناکہ بندی کی کوشش کے بعد قطر نے مذکورہ کمیٹی میں بین الاقوامی رابطے جمع کروائے تھے کیوں کہ قطر کا موقف ہے کہ سعودی عرب، یو اے ای کے اس کے شہریوں کے خلاف اقدامات نسلی امتیاز کے زمرے میں آتے ہیں،لہٰذا اب کمیٹی اگلے مرحلے کی کارروائی کرتے ہوئے کیسز کے میعار کا جائزہ لینے کے لیے 2 ایڈہاک مشاورتی کمیشن تعینات کرے گی۔