علی پور:خاتون پر سرعام سڑک پربہیمانہ تشدد کی ویڈیو وائرل

اوچ شریف باغی ٹی وی (نامہ نگار حبیب خان):خاتون پر سرعام سڑک پربہیمانہ تشدد کی ویڈیو وائرل

تفصیل کے مطابق ضلع مظفر گڑھ کی تحصیل علی پور تھانہ سٹی کی حدود میں ایک خاتون مسماة نیشا بی بی زوجہ محمدعامر گوپانگ پرسرعام سڑک پربہیمانہ تشدد کی ویڈیوسوشل میڈیا پر وائرل ہوئی ہے جس میں دیکھاجاسکتا ہے کہ خاتون پر دوآدمی بیچ راستے کے بہمانہ تشدد کررہے ہیں

ذرائع کے مطابق خاتون نیشابی بی چکی پر گندم کا آٹا پسوانے کیلئے گئی ہوئی تھی ،اس نے چکی مالک ظفر حسین سے کئی بار اپنی گندم پیسنے کیلئے کہا لیکن چکی مالک دوسرے لوگوں کی گندم پیستا رہا اور اس خاتون کوانتظار کرنے کا کہتا رہا جب سب لوگ چلے گئے تو چکی مالک ظفرحسین نے خاتون سے چھیڑچھاڑ شروع کردی اور اسے حرام کاری کیلئے کہتا رہا توخاتون نے اسے جوتے ماردئے اور چکی کے کمرے سے باہر زبردستی بھاگنے لگی ،اس دوران ذرائع کامزید کہنا ہے کہ باہر چکی مالک کے رشتہ دار موجود تھے تو چکی مالک ظفرحسین نے انہیں بلاکر خاتون کوتشددکانشانہ بنایا اور سڑک پر پھینک دیا

دوسری طرف پولیس تھانہ سٹی علی پور میں درج ایف آئی آر کے مطابق نیشابی بی نے بیان دیا ہے وہ ایک گھریلو کام کرنے والی عورت ہے ،تقریباََدن 2/3 بجے کے قریب وہ مسجد والی گلی میں جا رہی تھیں۔آٹا چکی کے قریب انہوں نے چکی کے مالک سے پوچھا کہ کیا انہوں نے ایک لال کپڑے پہنے ہوئے آدمی کو دیکھا ہے؟چکی کے مالک نے جواب دیا کہ نہیں دیکھا دوبارہ پوچھنے پرچکی کا مالک ظفر حسین غصے میں آ گیا اور گالیاں دینے لگا۔

سڑک پر دھوپ تیز ہونے کی وجہ سے میں چکی والے کے کمرے کے اندر چلی گئیں۔چکی والے نے چکی کا پٹا اٹھا کر ان کی کمر پر مارا۔ان کے سر پر اینٹ بھی ماری جس سے سر سے خون بہہ نکلا۔پھر چاروں آدمیوں نے انہیں تھپڑ مارے، ان کے بال پکڑے، گھسیٹا اور سڑک پر پھینک دیا۔گلی میں ان کے ہاتھ بھی مروڑے اور مارپیٹ کی۔ان سے موبائل فون اورنقدی 50,000 روپے بھی جو ظفر حسین چکی والے اٹھالئے ۔مارپیٹ کی وجہ سے علاقے کے لوگ جمع ہو گئے۔

اس دوران محمد حسین ولد اللہ دتہ قوم گوپانگ اور نوید ولد غلام شبیر قوم لنگاہ آ کرانہوں نے منت سماجت کرکے ان کی جان بچائی۔اس دوران نیشا بی بی نے نوید کے فون نمبر سے 15 پر کال کی۔پولیس آئی تو چکی والا چکی بند کر کے بھاگ گیا۔پولیس کارروائی کرتے ہوئے مقدمہ نمبر 393/24زیر دفعہ 354/34 کے تحت درج کرکے تحقیقات کا آغازکردیا ہے

Leave a reply