ورلڈ ہیڈر ایڈ

ڈاکٹرزکی ہڑتال،فیروز پور بند،نئے مطالبات سامنےآگئے

لاہور: مسیحا پھر سڑکوں پر آگئے ، سال میں اکثروبیشتر ہڑتالیں کرنے والے ڈاکٹرز مریضوں کو کب وقت دیتے ہیں ، اطلاعات کے مطابق حسب روایت آج پھر سول سیکرٹریٹ کے باہر محکمہ صحت کے کنٹریکٹ ملازمین کا دھرنا دوسرے روز بھی جاری، پنجاب بھر سے ماں، بچہ صحت اور غذائیت سے مربوط پروگرام محکمہ صحت کےکنٹرکٹ ملازمین ایل ایچ وی خواتین، مڈ وائفز اور گارڈز احتجاج میں شامل ہیں, ایل ایچ او خواتین اپنے چھوٹے بچوں کے ساتھ بھی دھرنے میں موجود ہیں۔

صدرمملکت ڈاکٹرعارف علوی کی اہلیہ محترمہ بھی ڈاکٹربن گئیں

اطلاعات کے مطابق ایک کے پی میں بھی ڈاکٹرز نے ہڑتال کررکھی ہے تو دوسری طرف پنجاب کے مختلف اضلاع سے آئے ماں بچہ صحت اور غذائیت سے مربوط پروگرام کے کنٹریکٹ ملازمین اپنی مستقلی کے لیے احتجاجی مظاہرہ کیا جو بعد میں دھرنے میں تبدیل ہوا گیا، لیڈی ہیلتھ ویزٹرز سمیت دیگر ملازمین کا احتجاج کل صبح 8 بچے شروع ہوا دن میں ڈی ہیلتھ کے ساتھ مطاہرین کے مذاکرات ہوئے جو ناکام ہو گئے اس پر ان کا اجتجاج دھرنے میں تبدیل ہو گیا جو ساری رات جاری رہا, مظاہرین کا کہناہے کہ مستقل کرنے کے مطالبہ پر ہر بار تسلیاں دی جاتی ہیں، مگر اب مطالبات پورے ہونے تک دھرنا جاری رہے گا۔

لاہور فیروز پور روڈ کو بند کرنے والے محکمہ صحت کے ملازمین کا کہنا ہےکہ وہ اضلاع کی سطح پربچے کی ڈیلوری، اور بچہ ماں کی نگہداشت کرتی ہیں، پانچ سال سے مستقل کرنے کا مطالبہ کر رہے اب تین ماہ سے تنخواہ بند کر رکھی ہے، احتجاج پر ڈی جی ہیلتھ آفس سے برطرفی کی دھمکیاں مل رہی ہیں، جب تک تحریری طور پر ان کے تمام مطالبے تسلیم نہیں کرلئے جاتے وہ دھرنا جاری رکھیں گے۔

181 گھروں میں ڈکیتی کتنے لوگ قتل اور زخمی ہوئے خبر نے ہلچل مچادی

احتجاج کےباعث سول سیکرٹریٹ چوک ٹریفک کیلئےمکمل طورپربندہےجس سےشہریوں کوبھی شدیدمشکلات کا سامنا ہے جبکہ مظاہرین نے سیکرٹری ہیلتھ کیساتھ مذاکرات ناکام ہونےکےبعدرات کھلےآسمان تلےگزاری ۔دوسری طرف حکام اور مظاہرین کےدرمیان مذاکرت جاری ہیں‌اور کسی بھی وقت یہ بریک تھرو ہوسکتا ہے

اینٹی بایوٹک چائے،مشروب بھی علاج بھی،ایشیا،یورپ اورمغرب میں یکساں مقبول

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.