دو اہم ملاقاتیں ،بھارت کا مکروہ چہرہ بے نقاب ، از تحریر لائبہ علی

جرمنی نے بھارت پر پابندی عائد کر دی ۔ جنرل باجوہ کی ایک دن میں دو اہم ترین ملاقاتیں ۔ ۔ ۔ وادی گلوان کی رئیل ٹائم فوٹیج ریلیز ۔ ۔ ۔ بھارت کا جھوٹا پروپیگنڈہ ۔

جرمنی نے بھارت کو ہتھیار فروخت کرنے پر مکمل بین لگا دیا ہے ، وجہ یہ سامنے آئ ہے کہ بھارت یہ ہتھیار نہتے کشمیریوں کیخلاف ، کشمیر میں استعمال کرے گا ، جسکی جرمنی کسی صورت اجازت نہیں دے گا ۔ یہ بھارتی موقف کی بہت بڑی شکست ہے ، پاکستان کے مؤقف کی تائید ، پاکستان کو اب کوشش کرنی چاہئے ، بھارت دنیا بھر میں بین ہو ۔ ۔ ۔
ایک ہی دن میں جنرل باجوہ نے دو اہم ترین ملاقاتیں کی ہیں ، ضمیری کابلوف ( روسی اینواۓ ) ، امریکی سینٹ کوم ( سینٹرل کمانڈ ) جنرل مکینزی سے ۔ ۔ ۔ ایک دن پہلے عمران خان کی ملاقات ( احمد والی مسعود ) افغانی مسعود قبیلے کے لیڈر سے ہوئی ۔ ۔ ۔ امریکہ کو کھلا پیغام دیا جا چکا ہے ، جو مرضی ہو جاۓ ، اب امریکہ کو افغانستان میں برداشت نہیں کیا جاۓ گا ، روس ، چین ، پاکستان ، ایران ، افغان طالبان ۔ ۔ ۔ خطے کی صورت حال طے کریں گے ، پاکستان ، امریکہ کا ساتھ نہیں دے گا ، اب یہاں مزید لڑائی نہیں ہوگی ۔ ۔ ۔ پاکستان اس خطے میں صرف ایک آپشن چاہتا ہے ، امن ۔ ۔ ۔ بائیڈن انتظامیہ کو پیغام دیا جا چکا ہے ، ٹرمپ جو کر گیا ہے اسے فالو کیا جائے ۔ امریکہ جانتا ہے ، پاکستان ، چین ، روس بلاک میں جا چکا ہے ۔ ۔ ۔

وادی گلوان میں 15 اور 16 جون کی درمیانی شب پیش آنے والا واقعہ ، جس میں چین ، بھارت فوجی گتھم گتھا ہوۓ تھے ۔ ۔ ۔ بھارتی فوج نے اپنے جھوٹے میڈیا کے ذریعے کہا تھا کہ اسکے بیس فوجی ہلاک ہوۓ ہیں ، بھارت نے چین کے درجنوں فوجی ہلاک کئے ۔ معمہ حل ہو گیا ، چین نے اس واقعہ کی رئیل ٹائم فوٹیج جاری کر دی ہے ، جس میں لڑائی شروع ہونے کی وجوہات سے لیکر کس کے کتنے فوجی مارے گئے ، سب موجود ہے ۔ ۔ ۔ چین کے چار فوجی اہلکار مرے ، انکی آخری رسومات ، گارڈ آف آنر دکھایا گیا ، جبکہ بھارتیوں کی ان گنت جانیں گئیں ۔ ۔ ۔ جب ڈس انگیجمنٹ کی بات چل رہی ہے بھارت ، چین کے درمیان تو پھر یہ ویڈیو لیک کیوں کی گئی ، چین کیمطابق یہ ریکارڈ کی درستگی کیلئے جاری کی گئی ہے ۔ ۔ ۔ ابھی چین کے پاس ہر موقعے ، ہر میٹنگ کی رئیل ٹائم ویڈیو موجود ہے ، ہر لمحے پر ، ہر وقت پر ، بھارت کو ایک نیا سرپرائز دیا جائے گا ۔ ۔ ۔
بتایا جا رہا ہے ، کواڈ ممالک کی وزراۓ خارجہ کا اجلاس ہوا ہے ، جس میں پھر چین کیخلاف بات چیت کی گئی ہے ۔ ۔ ۔ بھارت کواڈ کا حصہ ہے ۔ ۔ ۔ چین ، بھارت کو کسی صورت نہیں چھوڑے گا ۔ ۔ ۔ میرے باقاعدہ قارئین کو یاد ہوگا ، میں نے ایک آرٹیکل میں سال ، ڈیڑھ سال پہلے بتا دیا تھا ، بھارت کو توڑ کر ، جو ممالک بنیں گے ، انکی سیکورٹی ، معیشت ، کس قسم کی ملک ہونگے یعنی زرعی ، ٹیکنالوجی والے ، سب کچھ طے ھے ۔ ۔ ۔

بھارت کیجانب سے پروپیگنڈہ کیا جا رہا ہے کہ بھارت کے دباؤ کیوجہ سے سری لنکن پارلیمنٹ میں ، عمران خان کو خطاب نہیں کرنے دیا جا رہا ۔ ۔ ۔
او مودی جی ، اب تمہاری سری لنکا سے بھی رخصتی ہو چکی ہے ، عمران خان کے دورے سے چند روز قبل ہی سری لنکا نے بھارت کیساتھ 2003 میں ہونیوالا معاہدہ کینسل کر دیا ہے ، یہ معاہدہ بھارتی سرکاری پیٹرولیم کمپنی آئ او سی اور سری لنکا کی سرکاری پیٹرولیم کمپنی کے درمیان تھا ۔ ایسٹ کنٹینر ٹرمینل کولمبو پورٹ منصوبہ ابھی حال ہی میں کینسل ہوا ہے ، جس میں جاپان ، بھارت ، سری لنکا شامل تھے ۔ ۔ ۔ گزشتہ سال امریکہ نے سری لنکا کو انفرا اسٹرکچر ڈویلپمنٹ کے نام پر 480 ملین ڈالر کی مدد دینے کی کوشش کی ، سری لنكا نے انکار کردیا ، جبکہ اسی وقت چینی انویسٹمنٹ اور ایڈ قبول کرلی ۔ جافنا جزیروں میں 12 ملین ڈالر کا ٹھیکہ چین کو دیا گیا ہے ، سولر ، ونڈ پاور بجلی منصوبوں کا ۔ یہ جزیرے بھارتی سرحد سے 40 , 45 کلو میٹر دور ہیں ، جس پر بھارت کو مرچیں لگی ہوئی ہیں ، بھارت نے مدد کی آفر کی ، سری لنکا نے جواب ہی نہیں دیا ۔ ۔ ۔
سری لنکا میں بھارت ، امریکا کیلئے ریڈ لائٹ آن ہے ، جبکہ چین ، پاکستان کیلئے گرین لائٹ آن ہے ۔ ۔ ۔ 13 ارب ڈالر پورٹ سٹی ، ایک فیکٹری ، ٹائر پلانٹ ( پورٹ ہمبن ٹوٹا ) ، تین سو ملین ڈالر کا کوئلہ بجلی منصوبہ ، یہ سب کچھ چین کے پاس ہے سری لنکا میں ، پاک فوج ، چینی افواج کے بہترین تعلقات ہیں ، لنکن افواج سے ، بہت کچھ اور بھی ہے ، بھارت کی ، مودی کی اتنی اوقات نہیں کہ وہ پاکستان ، چین کے معاملات میں بول سکے ، بے بنیاد پروپیگنڈہ ، بھارت کا سری لنکا میں اگر اتنا ہی سفارتی و سیاسی اثر و رسوخ ہوتا ، تو اپنے منصوبے تو بچا لیتا پہلے ۔
بھارت کیلئے چین ، پاکستان کے پاس ہر بات میں ایک سرپرائز ہے ۔ سری لنکن سرپرائز کیا ہے ، انتظار کیجئے ؟؟؟

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.