fbpx

واٹس ایپ پر دھمکی آمیز پیغام ملنے کے بعد 17 سالہ لڑکے نے خوف سے خود کشی کر لی

دھمکی آمیز پیغامات بھیجنے والےشخص کوعدالت نے دس سال قید کی سزا سنائی ہے

اسپین: 17 سالہ نوجوان نے واٹس ایپ پر دھمکی آمیز پیغام ملنے کے بعد خوف سے خود کشی کر لی تھی۔

باغی ٹی وی :غیر ملکی میڈیا کے مطابق 60 سالہ شخص نے 17 سالہ نوجوان لڑکے کوکے ذریعے ایک ہی دن میں 119 دھمکی آمیز پیغام بھیجے جس پر اس نے خوف سے خود کشی کر لی تھی اس الزام میں پولیس نے دھمکی بھیجنے والے شخص کو گرفتار کر لیا تھا اور اب اسپین کی ایک عدالت نے ساٹھ سالہ شخص کو دس سال قید کی سزا سنائی ہے۔

ایران میں دو ہم جنس پرست خواتین کو موت کی سزا

رپورٹ کے مطابق یہ 2016ء کی بات ہے جب تین گھنٹے کے دوران مسلسل اس شخص نے 119 واٹس ایپ میسجز بھیجے تھےدھمکی آمیز پیغامات بھیجنے والےشخص کو خودکشی کرنے والے نوجوان نے کہا بھی تھا کہ وہ اسےخودکشی پر مجبورکر رہا ہے اگر اس نے دھمکانے کا یہ سلسلہ جاری رکھا تو وہ خود کشی کر لے گا-

عدالت نے اپنے فیصلے میں لکھا ہے کہ ساٹھ سالہ شخص پوری طرح آگاہ تھا کہ اس کی وجہ سے ایک نو عمر خود کشی پر مجبور ہو سکتا ہےاس کے باوجود وہ اسے مسلسل دھمکاتا رہا بلیک میل کرتا رہا کہ وہ اس کے والدین کو اس امر سے آگاہ کر دے گا کہ اس نے بالغوں والی ایک سائٹ وزٹ کی ہے۔

ٹِک ٹاک پر مبینہ سائبر حملہ، ایک ارب سے زائد لوگوں کا ڈیٹا لیک ہونے کا امکان…

اس صورت حال میں لڑکے نے بار بار اس سے معافی مانگی اور اسے کہا کہ وہ اسے میسج نہ کرے اگر اس نے یہ سلسلہ نہ روکا تو مجبورا خودکشی کر لے گا اس دوران سترہ سالہ لڑکے نے اسی روز اپنے گھر کی اوپر والی منزل سے گھر کے اندرونی صحن میں چھلانگ لگا کر خود کشی کر لی۔

عدالت نے اس واقعے کے کئی سال بعد مقدمے کا فیصلہ سناتے ہوئے دس سال قید سنانے کے علاوہ 173000 یورو کا کی رقم زرتلافی کے طور پر نو عمر کے والدین اور بھائی کو ادا کرنے کا بھی حکم دیا ہے۔

کینیڈا میں ہونے والے چاقو حملے کے ایک ملزم کی لاش برآمد