fbpx

بے بنیاد اور وحشیانہ قتل کب بند ہوں گے:صوفیہ مرزا بھی چُپ نہ رہ سکیں‌

لاہور:بے بنیاد اور وحشیانہ قتل کب بند ہوں گے:صوفیہ مرزا بھی چُپ نہ رہ سکیں‌،اطلاعات کے مطابق سیالکوٹ میں ہجوم کے ہاتھوں سری لنکن شہری کے قتل کے بعد پاکستان کی معروف فنکارہ ، اداکارہ صوفیہ مرزا بھی اتنا بڑ ظلم دیکھ کر چُپ نہ رہ سکی

ذرائع کے مطابق اس حوالے سے اپنے پغام میں صوفیہ مرزا کہتی ہیں کہ سیالکوٹ میں ہجوم کے ہاتھوں‌ ایک بے گناہ کا قتل کوئی معمولی قتل نہیں ،قتل کرنے والوں نے تو تمام حدیں پامال کیں

 

صوفیہ مرزا کہتی ہیں کہ کوئی اسے کیسے جائز قرار دے سکتا ہے؟ سارا ہجوم ایک شخص کے خلاف؟ یہ بے بنیاد اور وحشیانہ قتل کب بند ہوں گے؟ کیا یہ سمجھنا مشکل ہے کہ کسی کی جان لینا ہمارا حق نہیں!

صوفیہ مرزا کہتی ہیں کہ اب یہ سلسلہ بند ہونا چاہیے ، صوفیہ کا کہنا تھا کہ خدا را پلیز رک جاؤ!

خیال رہے کہ سیالکوٹ میں نجی فیکٹری کا سری لنکن منیجر فیکٹری ملازمین کے تشدد سے ہلاک ہوگیا۔

مشتعل افراد نے لاش کو سڑک پر گھسیٹا اور آگ لگا دی، مشتعل افراد کا دعویٰ ہے کہ مقتول نے مبینہ طور پر مذہبی جذبات مجروح کیے تھے۔

وزیرمملکت برائے اطلاعات و نشریات فرخ حبیب کا کہنا تھا کہ ایک مرکزی ملزم فرحان ادریس کو گرفتار کرلیا گیا ہے اور مزید 100 افراد زیر حراست ہیں۔

Facebook Notice for EU! You need to login to view and post FB Comments!