کرونا کی تباہ کاریوں کےباوجود حکومت کی پالیسیوں سے سالانہ 17 لاکھ روزگارکے مواقع پیدا ہوتے رہیں گے ، عالمی بینک نے دعویٰ کردیا

اسلام آباد: کرونا کی تباہ کاریوں کے باوجود موجودہ حکومت کی پالیسیوں سے سالانہ 17 لاکھ روزگارکے مواقع پیدا ہوتے رہیں گے ، عالمی بینک نے دعویٰ کردیا،اطلاعات کےمطابق عالمی بینک کا کہنا ہے کہ پاکستان میں 2040 تک مجموعی طور پرسالانہ 17 لاکھ روزگار کے مواقع پیدا ہوں گے۔

بینک کی جاری کردہ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ پاکستانی مارکیٹ میں اتنی بڑی افرادی قوت کی روزگار کی ضروریات پوری کرنے کےلئے پاکستان کو مجموعی قومی پیداوار ( جی ڈی پی) میں سالانہ 7 فیصد کی شرح نمو کی ضرورت ہے۔رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ افرادی قوت کے مختلف اداروں کے اعداد و شمار کے مطابق 2020 کے بعد دنیا بھر میں ہنر مند اور تربیت یافتہ کارکنوں کی دستیابی ایک اہم مسئلہ ہوگا۔ دنیا بھر میں 5 کروڑ 65 لاکھ ہنر مند افرادی قوت کی قلت ہوگی۔

عالمی بینک نے کہا ہے کہ عالمی مارکیٹ کی اتنی بڑی طلب کے مدنظر پاکستان کو تکنیکی وپیشہ وارانہ تربیت پرخصوصی توجہ دینی چاہئے تاکہ ہنر مند افرادی قوت کی برآمد سے قیمتی زرمبادلہ کے حصول کے ساتھ ساتھ بے روزگاری کی شرح پر بھی قابو پایا جاسکے۔رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ جنوبی ایشیاءکے ممالک میں پاکستان نوجوان آبادی کا حامل دوسرا بڑا ملک ہے ، ملک کی تقریباً22 کروڑ آبادی میں سے 64 فی صد کی عمریں 30 سال سے کم ہیں۔ افغانستان کے بعد پاکستان خطے کے ممالک میں نوجوان آبادی کاحامل دوسرا بڑا ملک ہے۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.