fbpx

صحرا بندی اورخشک سالی سےنمٹنےکاعالمی دن:17جون کوپاکستان سمیت دنیابھرمیں منایاجائےگا

لاہور:صحراوں اورخشک سالیوں میں اضافے پرقابوپانے کے حوالے سے عالمی برادری کی کوششوں کوایک دن کے طورپرمتعارف کروانے کا سلسلہ کئی سالوں سے جاری ہے ، یہی وجہ ہے کہ ہرسال کی طرح اس سال بھی صحرا بندی اور خشک سالی سے نمٹنے کا عالمی دن 17 جون (جمعہ) کو پاکستان سمیت دنیا بھر میں منایا جائے گا تاکہ صحرا بندی کے عمل کو روکا جا سکے اور بین الاقوامی ماحولیاتی ایجنڈے پر خشک زمین کے مسئلے کی نمائش کو مضبوط کیا جا سکے۔

مختلف ممالک جیسے کہ آسٹریلیا، الجزائر، کینیڈا، چین، گھانا اور امریکہ میں افراد اور تنظیموں نے حالیہ برسوں میں اس دن میں شرکت کی ہے۔ بہت سے واقعات صحرائی اور خشک سالی سے متعلق مسائل سے نمٹنے میں مدد کے لیے تعلیمی سرگرمیوں پر توجہ مرکوز کرتے ہیں۔

فعال سرگرمیوں میں تعلیمی اداروں اور عام لوگوں میں بیداری پیدا کرنے والے مواد کی تقسیم، جیسے کیلنڈر، فیکٹ شیٹ، پوسٹر اور پوسٹ کارڈ شامل ہو سکتے ہیں۔ اس دن میں تعلیمی کیس اسٹڈیز، فورمز یا خشک سالی اور صحرا بندی، معاشرے پر اس کے اثرات اور اس مسئلے کو کم کرنے کے طریقے بھی شامل کیے جا سکتے ہیں۔

تاہم، صحرائی اور خشک سالی کے خلاف لڑنے کی کوشش صرف اس دن نہیں ہوتی۔ بہت سے ممالک اس مسئلے کو فعال طور پر حل کرنے اور حل تلاش کرنے کے لیے ایک مسلسل کوشش کر رہے ہیں۔ریاستوں کو عالمی دن منانے کے لیے اس بات پرقائل کیا گیا تھا تاکہ صحرا بندی اور خشک سالی کے اثرات سے نمٹنے کے لیے بین الاقوامی تعاون کی ضرورت کے بارے میں بیداری کو فروغ دیا جا سکے، اور صحرا بندی سے نمٹنے کے کنونشن کے نفاذ کے لیے کوششوں کو عملی جامعہ پہنایا جاسکے۔

یہ وجہ ہے اس دن سے اقوام متحدہ کے کنونشن ٹو کامبیٹ ڈیزرٹیفیکیشن (UNCCD) کی ملکی پارٹیاں، غیر سرکاری تنظیمیں اور دیگر دلچسپی رکھنے والے اسٹیک ہولڈرز ہر سال 17 جون کو دنیا بھر میں اس مخصوص دن کو آؤٹ ریچ سرگرمیوں کے ساتھ مناتے ہیں۔