fbpx

یکم مئی مزدوروں کے عالمی دن کے موقع پر وزیر محنت و افرادی قوت سندھ سعید غنی کا پیغام

کراچی : یکم مئی مزدوروں کے عالمی دن کے موقع پر وزیر محنت و افرادی قوت سندھ سعید غنی کا پیغام

آج مزدوروں کا عالمی دن ہے۔
آج شکاگو کے شہیدوں کی قربانیوں کا دن ہے۔
ان شہداء کی قربانیوں کے نتیجہ میں دنیا بھر کے مزدوروں کے اوقات کار مقرر ہوئے تھے۔
اس قبل مزدوروں کو غلاموں کی طرح ڈیل کیا جاتا تھا اور ان پر جبر اور زیادتیاں کی جاتی تھی۔
ان شکاگو کے شہداء کی قربانیوں اور ان کی جدوجہد کے نتیجہ میں آج دنیا بھر میں مزدوروں کے حقوق کو تسلیم کیا گیا ہے۔
پاکستان پیپلز پارٹی جن جن ادوار میں حکومت میں رہی ان ادوار میں مزدوروں کی فلاح و بہبود کے لئے کام ہوئے ہیں۔
2008 سے 2013 تک پیپلز پارٹی کی وفاقی حکومت کے دور میں مزدوروں کے لئے بہت سے قانون سازی کہ گئی۔
اسی دور میں محکمہ محنت کو صوبوں کے تحت کیا گیا۔
صوبہ سندھ میں محکمہ محنت صوبے کے پاس آنے کے بعد تاریخی قوانین بنائے گئے ہیں۔
اس حوالے سے محکمہ محنت میں مزید کام کرنے کی ضرورت ہے اور اس پر کام کیا جارہا ہے۔
پیپلزپارٹی کی اعلی قیادت سے لے کر کارکنوں تک نے ہمیشہ مزدوروں کے حقوق کی جدوجہد کی ہے اور مزدوروں کے لئے آواز بلند کی ہے۔
آج بھی مزدوروں کو کم سے کم اجرت 25 ہزار دینے کے حوالے سے سندھ حکومت اور پیپلز پارٹی کی اعلی قیادت نے بڑا فیصلہ کیا۔
اسی وجہ سے وزیر اعظم شہباز شریف نے تمام صوبوں اور اسلام آباد میں مزدوروں کی کم سے کم اجرت 25 ہزار کرنے کا فیصلہ کیا ہے اور اس پر کام کیا جارہا ہے۔
جس ملک کا مزدور خوشحال ہوتا ہے وہاں کی صنعت ترقی کرتی ہے اور ملک کی معیشت بھی ترقی کرتی ہے اور ملک کے حالات بہتر ہوتے ہیں ۔
آج ہم سب کو مزدوروں کے عالمی دن پر ملک میں کام کرنے والے مزدوروں اور محنت کشوں کو یاد رکھنا چاہیے اور ان کے حقوق کی حفاظت کرنا چاہیے۔

انہوں نے مزید کہا کہ ان مزدوروں کو ان کی خدمات کے صلے میں ان کی جائز اجرت جو بنتی ہے وہ ان کو ادا کرنا چاہیے۔ ان مزدوروں کو ان کی جائز اجرت ادا کرکے ہم اس ملک سے نہ صرف غربت کا خاتمہ کرسکتے ہیں بلکہ اپنے ملک کو آگے بھی بڑھا سکتے ہیں۔