fbpx

زمانہ جاہلیت کی یاد تازہ، انسانی المیہ جنم لینے کو تیار

بااثرافراد نے زمانہ جاہلیت کی یاد تازہ کردی تھانہ صدر کے علاقہ موضع طالب میں انسانی المیہ جنم لینے کو تیار غریب خاندان ایک سال سے گھر میں محصور

بااثر افراد نے زمانہ جاہلیت کی یاد تازہ کردی مکان نہ بیچنے کی سزا بااثر افراد نے غریب خاندان کو گھر میں محصور کردیا چاروں طرف سے راستہ بند کردیا ایک سال سے ماں اور اسکی تین بیٹیاں گھر میں محصور روز مرہ ضرورت کی اشیاء حتی کہ ڈاکٹر سے دوائی لینے کے لئے بھی گھر سے نکلنے کا راستہ نہیں ہے بچیاں سکول بھی نہیں جاسکتیں جینے کا حق چھین لیا گیا جب ہمارے راستے بند کئے جارہے تھے پولیس کو اطلاع دی لیکن اے ایس آئی سیف کلیار نے بااثر افراد کی پشت پناہی کی عدالت نے ہمارے حق کو تسلیم کیا لیکن معاشرہ ہمیں جینے کی سزا دے رہا ہے میڈیا سے بات کرتے ہوئے جوان سال بچی آبدیدہ ہو گئی

خاندان کے سربراہ کا کہنا ہے کہ پولیس کے اے ایس آئی سیف کلیار نے ملی بھگت سے ہمارا راستہ بند کرایا

ایک سال ہونے والا ہے والد گھر سے باہر اور ہم گھر میں محصور ہیں یہ لوگ ہمیں زندہ دفن کرنا چاہتے ہیں قتل کی دھمکیاں دی جارہی ہیں دو بھائی بااثر افراد کے ڈر سے علاقہ چھوڑ گئے ہم گھر میں اکیلی ہیں اب تو گھر میں کھانے کا سامان بھی ختم ہوچکا ہے اگر ہمارے ساتھ کچھ ہوگیا تو سارا معاشرہ ہمارا مجرم ہوگا

دوسری جانب ڈی پی او چنیوٹ بلال ظفر شیخ سے جب اس بارے مؤقف جاننے کی کوشش کی تو چنیوٹ پولیس نے ویڈیو بیان دینے سے انکار کردیا جبکہ انکا کہنا تھا کہ عدالت میں دونوں فریقین کا معاملہ چل رہا ہے مزید اے ایس آئی کے خلاف معاملے کی انکوائری کی جارہی ہے انکوائری میں جو زمہ داران ہوئے انکے خلاف محکمانہ کاروائی کی جائے گی

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.