زمین کی اندرونی تہہ نے الٹی جانب گھومنا شروع کردیا ہے،تحقیق

0
102

چین میں ہونے والی ایک نئی تحقیق میں ماہرین نے دعوی کیا ہے کہ زمین کی اندرونی تہہ نے الٹی جانب گھومنا شروع کردیا ہے۔

باغی ٹی وی:جرنل نیچر جیو سائنسز میں شائع تحقیق کے مطابق زمین کی اوپری تہہ سیال دھات پر مبنی ہے جبکہ اندرونی تہہ ٹھوس دھاتوں پر مشتمل ہے اور اس کا حجم چاند کے 70 فیصد رقبے کے برابر ہے۔

سبز دم دار ستارہ زمین کے قریب سے 50 ہزار سال بعد دوبارہ گزرے گا

خیال کیا جاتا ہے کہ مینٹل کی نسبت زمین کے اندرونی تہہ کی تفریق گردش کور ڈائنامکس اور گروویٹیشنل کور مینٹل کپلنگ پر جیوڈینامو کے اثرات کے تحت ہوتی ہے اس گردش کا اندازہ بار بار زلزلہ کی لہروں کے درمیان وقتی تبدیلیوں سے لگایا گیا ہے جو اندرونی کور سے ایک ہی راستے سے گزرتی ہیں۔

ایسا مانا جاتا تھا کہ زمین کی اندرونی تہہ کاؤنٹر کلاک وائز گھومتی ہے مگر Peking یونیورسٹی کی تحقیق میں نتیجہ نکالا گیا کہ اندرونی تہہ کی گردش 2009 کے قریب تھم گئی تھی اور پھر وہ مخالف سمت یا کلاک وائز گھومنا شروع ہوگئی۔

محققین نے بتایا کہ ہمارے خیال میں یہ تہہ پہلے ایک سمت میں گھومتی ہے اور پھر دوسری جانب گھومنے لگتی ہے دونوں سمتوں میں گھومنے کا یہ چکر 70 سال (ہر سمت کا چکر 35 سال میں مکمل ہوتا ہے) تک مکمل ہوتا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ 2009 سے قبل آخری بار زمین کی اندرونی تہہ کی سمت 1970 کی دہائی میں تبدیل ہوئی تھی اور اگلی بار ایسا 2040 کی دہائی کے وسط میں ہوگا۔

گوگل کی مالک کمپنی الفابیٹ کا 6 فیصد ملازمین کو برطرف کرنے کا فیصلہ

زمین کی اندرونی تہہ کے حوالے سے تفصیلات اکٹھا کرنا بہت مشکل کام ہے کیونکہ وہ سطح سے 5 ہزار کلومیٹر گہرائی میں واقع ہے تاہم اس تحقیق کے لیے ماہرین نے زلزلوں کی لہروں کا تجزیہ کیا تھا اوراس کی مدد سےاندرونی تہہ کی گردش کا تعین کرنےمیں کامیابی حاصل ہوئی۔

محققین نے 1960 سے 1990 کی دہائی کے زلزلوں کے ریکارڈز کا موازنہ حالیہ زلزلوں سے کیا، جس سے عندیہ ملا کہ زمین کی اندرونی تہہ کی گردش 2009 میں رک گئی تھی اور پھر اس نے سمت بدل لی محققین کے مطابق اندرونی تہہ کے گھومنے کی سمت بدلنے سے دنوں کی لمبائی اور زمین کے مقناطیسی میدان میں تبدیلیاں آتی ہیں۔

چاند سے زمین کے طلوع ہونے کا منظر کیسا ہوتا ہے؟ناسا نے ویڈیو جاری کر دی

عالمی سطح پر مسلسل پیٹرن بتاتا ہے کہ اندرونی تہہ گردش حال ہی میں موقوف ہوئی ہے۔ ہم نے اس حالیہ پیٹرن کا موازنہ 1964 کے جنوبی جزائر کےڈبلٹس کےالاسکا کےزلزلہ ریکارڈ سے کیا ہے اور ایسا لگتا ہے کہ یہ تقریباً سات دہائیوں کے دہورے حصے کے طور پر اندرونی تہہ کی بتدریج واپسی کے ساتھ منسلک ہے-

ایک اور اہم موڑ کے ساتھ۔ 1970 کی دہائی کے اوائل میں۔ یہ کثیر الجہتی وقفہ کئی دوسرے جیو فزیکل مشاہدات، خاص طور پر دن کی لمبائی اور مقناطیسی میدان میں ہونے والی تبدیلیوں کے ساتھ موافق ہے۔

Leave a reply