ضمنی الیکشن ہلاکتیں، شہباز گل اور عثمان ڈار نے کس پر لگایا الزام؟ وزیراعلیٰ کا نوٹس

ضمنی الیکشن ہلاکتیں، شہباز گل اور عثمان ڈار نے کس پر لگایا الزام؟ وزیراعلیٰ کا نوٹس

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق وزیر اعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے ڈسکہ کے ضمنی الیکشن میں فائرنگ کے واقعہ کا نوٹس لے لیا

وزیر اعلیٰ پنجاب عثمان بزدار نے انسپکٹر جنرل پولیس سے رپورٹ طلب کرلی ،وزیر اعلیٰ پنجاب نے فائرنگ کے واقعہ میں ملوث ملزمان کی جلد گرفتاری کا حکم دے دیا،ملزمان کو جلد گرفتار کرکے قانونی کارروائی عمل میں لائی جائے، قانون کی خلاف ورزی برداشت نہیں کی جائے گی

قبل ازیدں آئی جی پنجاب نے ڈسکہ میں پولنگ اسٹیشن کے باہر فائرنگ سے 2 افراد کی ہلاکت کے واقعے کا نوٹس لے لیا، آئی جی پنجاب نے آر پی او گوجرانوالہ سے واقعے کی رپورٹ طلب کرلی آئی جی پنجاب نے ملزمان کو جلد از جلد گرفتار کرکے سخت قانونی کارروائی کا حکم دے دیا

واضح رہے کہ ڈسکہ میں پانچ مقامات پر قائم پولنگ سٹیشنز کے قریب نا معلوم افراد کی فائرنگ سے 2 افراد جاں بحق جبکہ 6 زخمی ہوگئے، ووٹرز میں خوف و ہراس پھیل گیا۔ڈسکہ میں نامعلوم افراد نے آتشیں اسلحے کا بے دریغ استعمال کیا۔ دھڑلے سے فائرنگ کی اور رفو چکر ہو گئے۔ نواحی گاؤں گوئند کے میں پولنگ سٹیشن پر فائرنگ ہوئی۔ ریسکیو ذرائع کے مطابق فائرنگ کے نتیجے میں 2 افراد جاں بحق اور 2 زخمی ہوگئے۔

اطلاعات کے مطابق جاں بحق ھونے والے ماجد کا تعلق تحریک انصاف سے جبکہ ذیشان کا تعلق ن لیگ سے ھے

شہباز گل کا کہنا ہے کہ اطلاعات کے مطابق مسلم لیگ ن کے غنڈے جاوید بٹ بے پاکستان تحریک انصاف کے کارکن ماجد کو گولیاں مار کر قتل کر دیا اور ساجد کو شدید زخمی کر دیا۔ ن لیگ گلو بٹوں اور جاوید بٹ جیسے غنڈوں کی جماعت ہے۔ یہ جرائم پیشہ لوگ ہیں۔ سیاست تو صرف ایک لبادہ ہے-ایک ایک قطرہ خون کا حساب لئیا جائے گا

عثمان ڈار کا کہنا ہے کہ رانا ثناءاللہ مسلح غنڈوں کے ہمراہ سیالکوٹ میں سانحہ ماڈل ٹاؤن کی تاریخ رقم کرنے پہنچا ہوا ہے! اب تک گولیاں لگنے سے 7 افراد شدید زخمی جبکہ 1 کارکن شہید ہو چکا ہے! ڈسکہ میں پر امن انتخابی عمل کے دوران کی گئی اس دہشت گردی کی FIR رانا ثنااللہ اور مسلح غنڈوں کے خلاف درج کروائیں گے!

تحریک لبیک کے ذمہ داران کا کہنا ہے کہ ڈسکہ ایں اے 75 مخالفین کی جانب سے پولنگ اسٹیشن پر جدید اسلحہ کا آزادانہ استعمال کیا گیا، ٹی ایل پی کے پر امن کارکنان کو زدوکوب کیا اور یہ ساری غنڈہ گردی انتظامیہ کی سرپرستی میں ہوتی رہی۔

ڈسکہ میں فائرنگ اور زخمیوں کے بعد پولنگ سٹیشنز پر سے عوام کا رش ختم ہونا چروع ہو گیا ہے، پولنگ کیمپوں پر موجود عوام نے گھروں کو جانے کو عافیت سمجھی، پولنگ اسٹیشن نمبر 237 مین بازار ڈسکہ 2 گھنٹے سے بند ہے

قبل ازیں ن لیگ کے رہنما رانا ثناء اللہ کا کہنا تھا کہ پی ٹی آئی پولنگ اسٹیشن ویران ہیں ایک پولنگ اسٹیشن پر فائرنگ کی گئی ، کارکنان کے سامنے آنے پر فائرنگ کرنے والے چلے گئے ،ووٹ کو پرامن طریقے سے کاسٹ کرانا ہماری ذمہ داری ہے ،ضمنی انتخابات کانتیجہ عوام کی آواز ہوگی جنہوں نے ووٹ کاسٹ نہیں کیا وہ کریں حکومت نے ملک کوتباہی کے دہانے پر لاکھڑا کردیا

ضمنی الیکشن، خونی الیکشن بن گیا، دو افراد جاں بحق

ن لیگی رہنما رانا ثناء اللہ کا مزید کہنا تھا کہ عوام پی ٹی آئی کے خلاف اپنی رائے کا آزادانہ استعمال کریں،ووٹرز کو گمراہ کرنے کے لیے افواہیں پھیلائی جارہی ہیں،کسی پولنگ اسٹیشن سے سادہ کاغذ پر رزلٹ نہیں لیں گے، اگروہ بڑا پولنگ اسٹیشن ہوتا توشاید آج میں ایم این اے نہ ہوتا،الیکشن کمیشن غیرمتعلقہ اور مسلح افراد کوپ ولنگ اسٹیشن میں نہ جانے دے،الیکشن صاف شفاف ہوگا تو پر امن بھی ہوگا ، پولنگ ایجنٹس گنتی کے وقت موجود ہونے چاہئیں، اپنے ایجنٹس کو کہا ہے وہ گنتی کے وقت موجود رہیں گے،

ڈسکہ میں لیگی امیدوار نوشین افتخار نےپولنگ اسٹیشن گورنمنٹ ڈگری کالج کا دورہ کیا،نوشین افتخار نےبیلٹ بکس کھلے ہونے اور دھاندلی کا الزام لگایا اس دوران امیدوار اور عملے میں تلخ کلامی بھی ہوئی

ڈسکہ، ضمنی الیکشن،فائرنگ سے جاں بحق افراد کا تعلق کس پارٹی سے؟

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.