چیئرمین ٹیوٹا کی تقرری میرٹ کے برعکس، بتایا جائے انہیں‌ یہ عہدہ کیوں‌ دیا گیا؟ اظہر صدیق ایڈووکیٹ کا گورنر کو خط

جوڈیشل ایکٹوازم پینل کے سربراہ اظہر صدیق ایڈووکیٹ نے چیئرمین ٹیوٹا کے عہدے پر تقرر کے حوالہ سے گورنر پنجاب، وزیر اعلیٰ‌ پنجاب اور دیگر حکام کو مکتوب بھیجا ہے جس میں‌ کہا گیا ہے کہ حافظ فرحت عباس کی تقرری میرٹ کے برعکس کی گئی ہے.

باغی ٹی وی کی رپورٹ‌ کے مطابق اظہر صدیق ایڈووکیٹ‌ نے اپنے مکتوب میں حافظ فرحت عباس کی تقرری کی وجوہات کے بارے میں تفصیلات مانگی ہیں اور لکھا ہے کہ انہیں‌ تمام تر ایسی وجوہات سے آگاہ کیا جائے جن کی بنیاد پر حافظ فرحت عباس کا تقرر عمل میں لایا گیا ہے. اظہر صدیق ایڈووکیٹ‌ کی جانب سے بھجوائے گئے مکتوب کے متن میں‌ کہا گیا ہے کہ آئین کے تحت متعلقہ حکام معلومات فراہم کرنے کے پابند ہیں،

اسی طرح انہوں نے یہ بھی لکھا ہے کہ معلومات فراہم نہ کرنا آئین کے آرٹیکل 19 اے کی کھلی خلاف ورزی ہے، ان کا کہنا تھا کہ حافظ فرحت عباس کے تقرر کی معلومات فراہم نہ کرنے پر قانونی دادرسی کیلئے عدالت سے رجوع کیا جائے گا، واضح‌ رہے کہ حافظ فرحت عباس کو ٹیوٹا کا چیئرمین لگائے جانے پر اعتراض‌ اٹھایا گیا تھا جس پر ترجمان وزیراعلیٰ پنجاب ڈاکٹر شہبازگل نے وضاحت کرتے ہوئے کہا تھا کہ چیئرمین ٹیوٹا کی تقرری قواعد وضوابط کے مطابق کی گئی ہے اوراس حوالے سے میڈیا پر نشر ہونے والی خبریں بے بنیاد اور حقائق کے برعکس ہیں۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.