ڈی ایچ کیو ھسپتال سرگودھا میں انتظامیہ کا ایک اور کارنامہ

سرگودھا ۔ ڈی ایچ کیو ھسپتال سرگودھا میں انتظامیہ کا ایک اور کارنامہ ۔ ڈیوٹی ندارد ، گھوسٹ درجہ چہارم ملازم بیرون ملک ہونے کے باوجود تنخواہ جاری ۔ سرکاری خزانہ کو لاکھوں کا ٹیکہ ۔ تاحال نہ کوٸ کارواٸی اور نہ ہی کوٸی ریکوری کی جا سکی ۔ جس پر انتظامیہ کی خاموشی بھی لمحہ فکریہ ھے ۔ جو پاکستان تحریک انصاف کے کرپشن فری نعرے کی نفی کرتا ھے ۔ 2017 میں بھرتی کیٸے گٸے درجہ چہارم کے گھوسٹ ملازمین کے متعلق مزید انکشاف ہوا ھے ۔ کہ عتیق ناصر نامی گھوسٹ ملازم بیرون ملک ہونے کے باوجود سرکاری خزانہ سے اسکی تنخواہیں جاری رہیں ۔ جبکہ انکشاف ہونے پر تنخواہ تو روک دی گٸی ۔ لیکن تاحال موجودہ انتظامیہ نے نہ تو گھوسٹ ملازم کیخلاف کوٸ کارواٸ کی ھے ۔ اور نہ ہی تنخواہوں کی ریکوری کی گٸی ھے ۔ جبکہ موجودہ ایم ایس کیساتھ ساتھ دیگر انتظامیہ نے بھی خاموشی اختیار کر لی ۔ دلچسپ امر یہ ھے کہ گھوسٹ ملازم بھرتی تو ہو گٸے لیکن انکی ڈیوٹی بھی تو انتظامیہ نے ہی لگانی ہوتی ھے ۔ اور حاضری رجسٹر بھی تو چیک کیا جاتا ھے ۔ اور تنخواہوں کا بل بھی تو بنا ہوتا ھے ۔ وہ عمل کس طرح جاری و ساری رہا ۔ اور گھوسٹ ملازمین کے انکشاف ہونے کے باوجود ان کو کیوں نکالا نہیں گیا ۔ اور انکیخلاف کارواٸی کیوں نہیں کی گٸی ۔ یہ انتظامیہ کی کارکردگی کا منہ بولتا ثبوت اور انکی کارکردگی پر سوالیہ نشان ھے ۔ اعلیٰ حکام سے فوری نوٹس لینے کا مطالبہ

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.