fbpx

انتظامیہ کی بے حسی ، غریب شہری ریلیف فنڈ کیلئے دربدر کی ٹھوکریں کھانے پر مجبور

ایبٹ آباد:اسسٹنٹ کمشنر آفس ریلیف فنڈ میں کرپشن کیس تاحال حل نہ ہوسکا غریب شہری ریلیف فنڈ کے حصول کے لیے دربدر کی ٹھوکریں کھانے پر مجبور ہمیں دفاتر کے چکر لگوائے جاتے ہیں ہمیں ہمارا حق کون دے گا دکن سیداں کے رہائشی غریب شخص کی میڈیا سے شکوہ، اس ضمن میں دکھن سیداں کے رہائشی سید شہادت حسین شاہ نے بتایا کے 2005 میں ہونے والے زلزلہ میں میرے مکان میں کو جزوی طور پر نقصان پہنچا جو بعدازان ہونے والی بارشوں میں مکمل طور پر گر گیا جس پر میں نے اسسٹنٹ کمشنر آفس میں اپنے ہونے والے نقصان کے ازالے کے لیے درخواستین دی اور کئی بار دفتر کے چکر بھی کاٹے اسی دوران غریبوں کے لیے آنے والے ریلیف فند میں وقاص نامی ریلیف فند انچارچ اپنے دیگر افسران کے ساتھ مل کر فنڈ کے لاکھوں روپے کھا کر بیرون ملک رفو چکر ہوگیا مگر ہم آج تک اپنے حق کے لیے دربدر کی ٹھوکریں کھا رہے ہیں

اس حوالے سے متعدد بار میں کمشنر ہزارہ اور ڈپٹی کمشنر ایبٹ آباد کے پاس گیا مگر وہ صرف ٹال مٹول کر رہے ہیں ہمیں ہر بار صرف لالی پاپ دیا جا رہا ہے مجھ سمیت کئی غریب جیب سے تمام اخراجات کر کے دفاتر میں ذلیل خوار ہوتے ہیں پاکستان تحریک انصاف کی حکومت نے کرپشن مکاؤ کے لیے بڑے بڑے دعوے کیے تھے مگر ایبٹ آباد کی ضلعی انتظامیہ عمران خان کے اس ویژن کے خلاف کام کر رہی ہے اور صرف اپنے جیبوں کو بھرا جا رہا ہے میری وزیراعلی کے پی کے کمشنر ہزارہ سے اپیل ہے کہ خدارا ہمارے لیے آنے والا فنڈ ہمیں مہیا کیا جائے تاکہ ہماری مشکلات حل ہو سکیں۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.