fbpx

عمران خان کی اہلیہ بشری بی بی نے ملک ریاض کی بیٹی سے کیا مانگا؟ ملک ریاض اور اسکی بیٹی کی آڈیو لیک

بحریہ ٹاؤن کے چئیرمین ملک ریاض کی ایک اور آڈیو لیک ہو گئی-

باغی ٹی وی :باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق پراپرٹی ٹائیکون ملک ریاض کی جانب سے عمران خان کی اہلیہ بشری بی بی کو ہیرے کی انگوٹھی دینے کے چرچے تو عام ہوئے تھے ساتھ ہی بحریہ ٹاؤن کی جانب سے فرح جو بشری بی بی کی دوست ہے کو زمینیں دینے کی بھی خبریں آئی تھیں اب ایک آڈیو سامنےآئی ہےجس میں ملک ریاض اور انکی بیٹی امبر بات چیت کررہے ہیں دونوں کی گفتگومیں انگوٹھی دینے ۔بشری بی بی کی ڈیمانڈ اور کاغذات کا ذکر ہے-


بزنس ٹائیکون اور ہاؤسنگ سوسائٹی بحریہ ٹاؤن کے چئیرمین ملک ریا ض اور ان کی بیٹی امبر ملک کی ایک آڈیو وائرل ہو رہی ہے جس میں وہ خاتون اول اور فرح گوگی کے ساتھ کی گئی ڈیل کے بارے مین بات کر رہے ہیں-

وائرل آڈیو میں ملک ریاض کی‌ صاحبزادی بزنس ٹائیکون کے ساتھ بات کرتے ہوئے کہتی ہیں کہ فرح کا فون آیا تھا وہ کہہ رہی تھی کہ انگوٹھی منگوا لیں میں نے انگوٹھی منگوا لی ہے کہہ رہی تھی کہ ہگتے کو میری ملاقات ہے تو اس سے پہلے انتظام کر لیں-

ملک ریاض کہتے ہیں کہ کب ملاقات ہے؟ امبر ملک کہتی ہیں کہ ہفتے کو ،ملک ریاض کہتے سنائی دیتے ہیں کہ تو کردو تم اسے انگوٹھی منگوا دو-

امبر ملک کہتی ہیں امی نے اویس کو کہہ دیا ہے پرسوں آجائے گی ملک ریاض کہتے ہیں کہ اسے کہو ادھر سے ہی تیار کر کے منگوا لے-

ملک ریاض کی بیٹی کال پر بتاتی ہیں کہ نہیں وہ( فرح) کہتی ہے کہ مجھے ہیرا منگوا دیں انگوٹھی میں ادھر سے ہی بنوا لوں گی جو پیسے بنیں گے بعد میں مجھے دے دینا میں نے کہا ٹھیک ہے دوسری بات یہ ہے اس نے( فرح) مجھے کہا کہ خان صاحب( عمران خان) کا فون آیا تھا صبح آپ کی سائٹ کے تالے کھل جائیں گے جو رپورٹ جمع کرائی ہے خان صاحب نے کہا ہے کہ وہ میری گارنٹی ہے میں ختم کرادوں گا اور لیٹر بھی آپ کو کل مل جائے گا اور جو ٹائم ہے آپ کا وہ بی بی ( بشریٰ بی بی ) مجھے رات کو بتائیں گی-

امبر ملک کا کہنا تھا کیونکہ میں نے فرح پر پوری چڑھائی کر دی ہے میں نے کہا فرح دیکھو ایک کام نہیں ہوا میں نے کہا ایک کام نہیں ہوا عمران خان صاحب نے بھی 4 دن لے لئے ہیں ابھی تک لیٹر نہیں آیا تالے بھی لگ گئے ہیں رپورٹ بھی جمع ہو گئی ہے عدالت میں تو میں نے کہا کیا بنے گا ہمارا ؟ تو فرح کہتی تم پینک نہ ہو تو پھر مجھے خود فون آیا کہ بی بی یہ کہہ رہی ہے ٹھیک ہے کل آپ کو لیٹرلازمی مل جائے گا-

ملک ریاض کہتے ہیں کہ ہفتے سے پہلے اسے انگوٹھی منگوا دینا ، امبر ملک کہتی ہیں کہ وہ کہتی ہے کہ تم کسے انگوٹھی دے رہی تھی خاتون اول کو تم نے دی کیا ہے –

ملک ریاض کہتے ہیں اور تم نے پوچھا نہیں تھا پہلے کہ کتنے کیرٹ کی ہو؟ امبر ملک کہتی ہیں میں پوچھا تھا اس نے کہا تم کتنے کیرٹ کی پہنتی ہو؟ میں نے کہا تین،میں نے کہا پھر تم لوگوں کے لئے بھی تین ٹھیک ہے فرح کہتی نہیں پانچ کیرٹ تو کم ازکم منگوا کر دو میں نے کہا اچھا اور میں نے پہلے دی ہوئی انکگوٹھی واپس منگوا لی کہ کہیں یہ انگوٹھی بھی نہ پی جائے یہ سوچ کر کہیں یہ بھی نہ رکھ لے اور کہا کہ آپ کو پرسوں واپس مل جائے گی –

ملک ریاض کہتے ہیں کہ وہ لیٹر میں کل دے دوں گا اسے کہو ابو کہہ رہے ہیں کہ وہ لیٹر میں کل بھیج دے دوں گا –

ملک ریاض کی صاحبزادی کہتی ہیں کہ میں پوری چڑھائی کی اس پر میں نے کہا میں اتنی ڈسٹرب ہوئی ہوں میں صبح اتنا روئی ہوں اگر میری یہ فلینگ ہے تو ابو کی کیسی فیلنگ ہو گی میں نے کہا کہ جگہ جگہ ابو لوگوں کو ٹریس کر رہے ہیں فیس کر رہے ہیں اور ہر کوئی لولی پوپ دے رہا ہے فرح کہتی نہ پینک ہو میں نے دو تین فون کئے ہیں میری بی بی سے بات ہو گئی ہے لیٹر آپ کو کل لازمی مل جائے گا صبح تالے کھل جائیں گے خان صاحب نے کہا رپورٹ کا ذمہ دار میں ہوں-


عمران خان نے ایک ویڈیو بیان میں کہا تھا کہ بشریٰ بی بی بہت کم لوگوں سے ملتی ہیں جسے سب سے زیادہ ملتی ہیں وہ فرح خان ہیں-

واضح رہے کہ فرح بی بی سابق وزیراعظم عمران خان کی اہلیہ بشری بی بی کی دوست ہیں۔فرح بی بی پر پنجاب میں کرپشن کے الزامات لگے ہیں نیب میں بھی تحقیقات جاری ہیں نیب نے فرح کے ملازمین کو طلب کیا تھا لیکن وہ پیش نہ ہوئے اور انکے وکیل نے جواب جمع کروایا ۔فرح کی کرپشن کا ذکر سب سے پہلے ن لیگی رہنما مریم نواز نے کیا تھا کہ فرح جو کر رہی ہے وہ سب سامنے لائیں گے اسکے بعد فرح کا نام مسلسل میڈیا میں آنے لگا بنی گالہ کے کتوں کے ساتھ کھیلتے ہوئے اسکی تصاویر بھی سامنے آئیں۔جب فرح پر کڑی تنقید ہوئی تو سابق وزیراعظم عمران خان خود فرح کے دفاع میں آئے اور اسکا ترجمان بن کر پریس کانفرنس کر ڈالی۔ اب عمران خان کی فرح کے بارے ایک مختصر ویڈیو سامنے آئی ہے جس میں وہ کہہ رہے ہیں کہ میری اہلیہ بشری بی بی بہت کم لوگوں سے ملتی ہے لیکن فرح کے ساتھ انکا رابطہ زیادہ تھا۔

فرح کی کرپشن کی تحقیقات جاری ہیں پنجاب میں تبادلوں کے نام پر مبینہ طور پر انہوں نے اندھیر نگری مچا رکھی تھی تبادلوں کے ریٹ فرح طے کرتی اور پھر سارے معاملات بنی گالہ سے طے ہوتے ۔عثمان بزدار اس حوالہ سے بے بس تھے اور ڈمی وزیراعلی کے طور پر کام کر رہے تھے شاید یہی وجہ تھی کہ عمران خان کسی اور کو وزیراعلی نہیں لانا چاہتے تھے تا کہ معاملات کو بنی گالہ سے ہی کنٹرول کیا جائے-