fbpx

مسجد الحرام میں خواتین سیکیورٹی اہلکاروں کی تعیناتی ، سعودیہ کا جدت پسندی کا سفر جاری

مسجد الحرام میں خواتین سیکیورٹی اہلکاروں کی تعیناتی ، سعودیہ کا جدت پسندی کا سفر جاری

باغی ٹی وی:سعودی عرب میں محمد بن سلمان کا جدت پسندی اور خواتین کو بااختیار بنانے کا سفر جاری ہے . مسجد الحرام میں خواتین سیکیورٹی اہلکاروں کو تعینات کر دیا گیا۔ اس سے پہلے خواتین کو مساجد کے انتظامی اور تکنیکی محکموں میں بھی تعینات کیا جاچکا ہے۔

سعودی عرب میں حج و عمرہ سیکیورٹی کی خواتین اہل کاروں نے زائرین، نمازیوں کی خدمت کے لیے مسجد حرام میں اپنے مقررہ مقامات پر کام کا آغاز کر دیا ہے۔ خواتین اہلکاروں کی ذمہ داریوں میں احتیاطی اقدامات اور حفاظتی تدابیر کے نفاذ کی نگرانی اور حرم مکی میں خواتین سے متعلق تمام سیکیورٹی امور پر نظر رکھنا شامل ہے۔

بل ازیں ادارہ امور حرمین شریفین کی جانب سے خواتین عمرہ زائرین کی رہنمائی اور مدد کیلئے 1500 خواتین اہلکاروں کی خدمات حاصل کرنے کی منظوری دی گئی تھی۔ متعین کی جانے والی 1500 مدد گار خواتین میں سے 600 اہلکار ادارے میں فنی امور کی دیکھ بھال کریں گی، جب کہ 50 خواتین اہلکار الیکٹرانک ویل چیئرز کی نگرانی اور انہیں استعمال کرنے کے حوالے سے خواتین زائرین کی رہنمائی کے فرائض انجام دیں گی، جب کہ باقی 850 خواتین اہلکار فیلڈ ورک کیلئے مخصوص ہیں۔

واضح رہے کہ مسجد الحرام میں گائیڈ خواتین کی جانب سے خواتین عمرہ زائرین کو ہر ممکن مدد فراہم کی جاتی ہے۔ گراؤنڈ میں موجود خواتین رہنمائی کا کام کرتی ہیں۔ یہ خواتین مسجد الحرام میں مختلف مقامات پر تعینات کی جاتی ہیں تاکہ آنے والی خواتین زائرین کو ہر ممکن مدد فراہم کی جاسکے۔

یہاں یہ بات بھی قابل ذکر ہے کہ سعودی عرب میں خواتین کو با اختیار بنانے کے مختلف منصوبوں کا آغاز سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان نے اقتدار سنبھالنے کے بعد کیا۔ جسے کے بعد سعودی عرب میں مختلف شعبوں میں خواتین کی تعیناتیوں کا عمل شروع ہوا۔ اس ضمن میں سعودی عرب کی تاریخ میں پہلی بار حرمین شریفین کے انتظامی امور میں ایک خاتون کو اہم عہدے پر تعینات کیا گیا ہے۔

مسجد حرام اور مسجد نبوی کے جنرل امور کے چیئرمین الشیخ ڈاکٹر عبدالرحمان السدیس نے ڈاکٹر

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.