میرا سائباں از ؛عائش نعیم

2سومیرا سائباں
عائش نعیم
(میرا جسم میری مرضی کے مقابل مشرقی روایات کی امین ایک خوبصورت نظم)

قائم رہے سایہ تیرا
خوشیوں کی تو ہی ہے وجہ

یہ لالہ زار تجھ سے ہے
اس گھر کا تو سائباں

یہ زندگی تجھی سے ہے
تو زندگی کی ہے بہار

یہ رب نصیب نہ کرے
کہ ہو زندگی تیرے بنا

تیرے ہی دم سے ہر خوشی
اونچا رہے یہ نام تیرا

لاہوت ہو پرواز تیری
میرے لبوں پہ ہے دعا

قائم رہے میرا سائباں
میری چھت، میرا مہرباں

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.