fbpx

نظام عدل اور عوام تحریر : راجہ حشام صادق

دنیا کے نقشے پر ہمارا پیارا وطن پاکستان، اور اس ملک بسنے والی عوام کو سمجھنا ہو گا کہ کچھ ذمہ داریاں ہماری بھی تو ہوتی ہیں تمام معاملات طاقتور طبقے اور حکمرانوں پر چھوڑ دیئے جائیں تو پھر انصاف کا نظام تو بالکل ہی ختم ہو جائے گا وطن عزیز بھی نظام عدل ختم ہو چکا طاقتور خریدار ہو تو ہمارا کرپٹ نظام عدل فیصلوں کی قیمت وصول کرتا بے۔

اس نظام میں چھوٹے موٹے مجرم کو تو سالوں جیل کی سلاخوں کے پیچھے پھینک دیا جاتا ہے مگر کبھی طاقتور کے خلاف کوئی کارروائی نہیں ہوئی۔

اس نظام سے مایوس عوام کو اپنا کردار ادا کرنا ہو گا اس ظلم کے خاتمے کیلئے اپنی آواز بلند کرنی ہو گی۔

یاد رکھیں اس ملک کا یہ اشرافیہ مٹھی بھر ہے یہ پیسے کے پجاری طاقتور لوگ کوئی قانون یا کوئی ادارہ تو نہیں
ہمہیں اجتماعی کوشش کر کے اس سارے نظام کو جڑ سے اکھاڑ پھینکنا ہو گا ایک صاف شفاف نظام کے لیے سولی پر چڑھنا بھی قبول ہے قربانیاں بھی دینا ہوں گی اپنی آنے والی نسلوں کو تاریکی سے نکال کر روشنی کی طرف لانا ہے اپنے تمام فیصلے صرف اللہ پاک کی ذات اور روز محشر پر چھوڑ کر۔
یاد رکھیں اللہ پاک بھی ان کی مدد کرتے ہیں جو اپنی مدد آپ کے تحت منزل کے حصول کے لئے سفر جاری رکھتے ہیں ۔

اس ظالم اور کرپٹ نظام عدل سامنے ڈٹ جائیں تاریخ ایسے ہی چند کرداروں کو یاد رکھتی ہے جو سولی تو چڑھ مگر کسی فرعون کے سامنے سر نہیں جھکائے آج ہمارے اوپر انصاف کے لئے منصفوں کا ایک ایسا گروہ مسلط ہو چکا ہے جن کے کردار جن کے فیصلے ذاتی مفادات کے تحفظ کے لئے ہوتے ہیں جو اس ملک کا سب سے بڑا مافیا بن جکے ہیں ان کے فیصلوں سے چوروں ڈاکوؤں اور قاتلوں کو تحفظ ملتا ہے یاد رکھیں اگر آج ہم مایوس ہو کر بیٹھ گئے تو اللہ پاک کی عدالت میں ہم بھی مجرم ہوں گے اس گندے نظام کے خاتمے کے لئے اٹھیں اور اپنا کردار ادا کریں انشاءاللہ ظلم کی یہ کالی رات ختم ہو کر رہے گی۔

اللہ پاک سمجھ کر عمل کرنے کی توفیق عطا فرمائے آمین

@No1Hasham