fbpx

ن لیگ جو الیکشن جیتے وہ ٹھیک ہے، جو ہارے وہاں دھاندلی،شبلی فرازبرس پڑے

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق وفاقی وزیراطلاعات شبلی فراز نے این 75میں دوبارہ انتخابات کا مطالبہ کر دیا

وفاقی وزیر اطلاعات شبلی فراز نے کہا ہے کہ وزیراعظم کی 20 پولنگ اسٹیشنز پردوبارہ پولنگ کی پیشکش شفاف انتخابات یقینی بنانے کا مظہرہے، شبلی فراز کا کہنا تھا کہ وزیراعظم کی فراخ دلی پر انگلیاں اٹھانے والے شفافیت اور اوپن بیلٹ کی مخالفت کر رہے،مخالفت کرنے والوں کا دوغلا پن قوم کے سامنے کھل کر عیاں ہو چکا ہے، ن لیگ نے آج تک کوئی الیکشن مہذب طریقے سے نہیں لڑا،ہمارے قائد کی پہچان ہے وہ کسی دباوَ میں نہیں آتے

شبلی فراز کا مزید کہنا تھا کہ آپ سینیٹ الیکشن میں اوپن ووٹنگ کی کیوں مخالفت کر رہے ہیں؟ ن لیگ جو الیکشن جیتے وہ ٹھیک ہے، جو ہارے وہاں دھاندلی ہوئی ہے، ملک میں سیاست کی خریدو فروخت کی روایت قائم کرنے والی پارٹی سیخ پا ہے، خریدوفروخت، دھونس، دھاندلی ن لیگ کا طرہ امتیاز ہے ،ان کی لیڈر شپ جھوٹ پر مبنی بیان دیتی ہے اوپن ووٹنگ کی مخالفت وہ کرتا ہے جس کا خریداری کا ارادہ ہو، قوم پوچھے یہ کیوں اوپن ووٹنگ کی مخالفت کررہے ہیں،

شبلی فراز کا مزید کہنا تھا کہ الیکشن میں وہ لوگ جیتیں جو عوام کی خدمت کرنا چاہتے ہیں ،ہم اداروں پر یقین رکھتے ہیں،لیگ والے لین دین پر یقین رکھتے ہیں،شہیدوں کے لواحقین کی ڈیمانڈ ہے ان کو عدالت میں لایا جا ئے،جن کا ماضی کرپشن سے سجا ہوا ہے،وہ لوگ آکر بھاشن دے رہے ہیں دھاندلی کرتے ہیں، کرپشن کرتے ہیں اور پھر پریس کانفرنس کرتے ہیں رانا ثنا اللہ اور جاوید لطیف جیسے لوگوں نے امن خراب کیا،ہمارا ووٹ بینک اوپر جارہا ہے، ان کا ووٹ بینک نیچے جارہا ہے،ان کی تربیت دھوکا، فریب، جعل سازی، دھونس پر کی گئی ہے، نوشہرہ میں بھی ہمارے امیدوار نے اعتراضات جمع کرائے ہیں، ن لیگ جو الیکشن جیتے وہ ٹھیک ہے، جو ہارے وہاں دھاندلی ہوئی ہے، ملک میں سیاست کی خریدوفروخت کی روایت قائم کرنے والی پارٹی سیخ پا ہے،

مسلم لیگ ن کی این اے 75 سے امیدوار نوشین افتخار نے چیف الیکشن کمشنرکو درخواست کی تھی جس پر چیف الیکشن کمشنر نے نتائج روک دیئے،نوشین افتخار کی جانب سے دی گئی درخواست میں کہا گیا ہے کہ انتخابات میں 23 پولنگ ا سٹیشن کا عملہ انتخابی نتائج سمیت غائب ہے،اب تک 335 اسٹیشنوں کےنتائج مرتب کیے گئے ہیں،ریٹرننگ افسر نے پریزائیڈانگ افسران اور عملے کی بازیابی پربےبسی کا اظہارکیا مسنگ نتائج کے حوالے سے شکوک شبہات پائے جاتے ہیں،مسنگ 30 پولنگ اسٹیشنوں کے نتائج معطل کرکے ان کا فرانزک آڈٹ کروایاجائے،الیکشن کمیشن کی طرف سے پوری صورتحال کے جائزے تک نتیجہ روک دیاجائے،مسنگ 23 اورڈسکہ سٹی کے 36 پولنگ ا سٹیشنوں میں دوبارہ انتخابات کروائے جائیں

پولنگ ایجنٹس پولنگ بیگ سمیت لا پتہ ہوئے، عمران خان پر مقدمہ ہونا چاہئے،مریم اورنگزیب

این اے 75 کے337 پولنگ سٹیشنزکے نتائج بدلے یا نہیں؟ دوران سماعت اہم انکشاف

این اے 75،پی ٹی آئی کی استدعا ، دوران سماعت چیف الیکشن کمشنر کا بڑا اعلان

ہمارے لوگ شہید ہوئے، کن شہروں سے غنڈوں کو لایا گیا،علی اسجد ملہی کا اہم انکشاف

ن لیگ کے افتخار الحسن عرف ظاہرے شاہ کے انتقال سے خالی ہونیوالی نشست این اے 75 ڈسکہ پر رات ساڑھے چار بجے تک زبر دست مقابلہ چل رہا تھا ، ادھر این اے 75 ڈسکہ میں سارا دن کشیدگی کا ماحول رہا، موٹر سائیکل سوار افراد کھلے عام جدید اسلحہ لیے سڑکوں پر دندناتے رہے، پولنگ کے دوران لڑائی جھگڑے کے واقعات بھی ہوئے اس دوران ایک پولنگ سٹیشن پر جھگڑے کے بعد فائرنگ سے 2 افراد جاں بحق اور 10 زخمی ہوگئے۔

پاکستان مسلم لیگ نون کے رہنما احسن اقبال نے ڈسکہ میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ این اے 75 میں جعلسازی کے ساتھ نتائج بنائے گئے، پریذائیڈنگ آفیسرز کو اغوا کیا گیا، انکوائری ہونے چاہیے کہ کن لوگوں نے یہ کام کیا، ان پولنگ سٹیشنز میں دوبارہ پولنگ ہونی چاہیے۔

ڈی ایس پی نے مجھ پر تشدد کیا اور میری چادر کھینچ لی،یہ لڑائی میری نہیں بلکہ، نوشین افتخار برس پڑی

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.