fbpx

پاکستانی اسٹاک ایکسیچینج مارکیٹ بھوکی ہوگئی ،دنیا بھرکے سرمایہ کاروں کواپنی طرف کھینچ رہی ہے ، بلوم برگ

واشنگٹن :پاکستانی اسٹاک ایکسیچینج مارکیٹ بھوکی ہوگئی ، دنیا بھرکے سرمایہ کاروں کواپنی طرف کھینچ رہی ہے ، اطلاعات کے مطابق امریکی ڈیٹاومیڈیا کمپنی بلوم برگ نے پاکستان اسٹاک ایکس چینج کودنیا کی بہترین کارکردگی کی حامل مارکیٹ قرار دیدیا۔

ذرائع کے مطابق کے مطابق، بلوم برگ کے مطابق پاکستان اسٹاک ایکس چینج میں گذشتہ 3ماہ کے دوران امریکی ڈالرکے تناظر میں مجموعی طورپر36فیصد کی تیزی ریکارڈ کی گئی ہے اور اسی بنیاد پر کے ایس ای100انڈیکس دنیا کے دیگرانڈیکسز کی فہرست میں صف اول پرآگیا ہے۔

کورونا وائرس وبائی امراض کے دوران معیشت کو مضبوط بنانے کے لئے رواں سال سود کی شرحوں میں کمی کے لئے ملک کا مرکزی بینک عالمی سطح پر سب سے زیادہ جارحانہ رہا ہے۔ اس سے فکسڈ انکم سے دوگنی ریٹرن میں کمی آئی ہے اور ایکوئٹیوں کے لئے تیزی کے معاملے کو تقویت ملی ہے۔

بلوم برگ کا کہنا ہے کہ سود کی شرحوں میں اچانک کمی کے بعد سرمایہ کاری میں دلچسپی دیکھنے میں آگئی ، چیف انویسٹمنٹ آفیسر ایوب خھرو نے کہا ، جس کے اثاثوں کی قیمت تین ارب ($ 210 ملین) ہوگئی ہے پچھلے سال میں اگر شرح کچھ عرصے تک ان سطحوں پر برقرار رہی تو وہ مارکیٹ کو چلاتے رہیں گے۔

پاکستان کا کے ایس ای 100 انڈیکس مارچ کے آخر سے 36 فیصد تک بڑھ گیا ہے ، جو اس عرصے کے لئے ایشین ایکویٹی انڈیکس کے سب سے بہترین اشارے میں سب سے بہترین سطح ہے۔بلوم برگ کا کہنا ہےکہ معیشت کو فروغ دینے کے اقدامات اور سات دہائیوں کے دوران پہلی بار دبئی میں مقیم ایف آئی ایم پارٹنرز کو فلپائن کے بعد پاکستان کو اس کا سب سے بڑاپرکشش معاشی مرکزدیکھنے کو مل رہا ہے