پی ایچ اے کو عدالت نے اہم کام سے روک دیا

0
33

پی ایچ اے کو عدالت نے اہم کام سے روک دیا

باغی ٹی وی رپورٹ کے مطابق ، عدالت نے پی ایچ اے کو آؤٹ ڈور ایڈورٹائزنگ سے اپریل تا جون تک کا سکائی ٹیکس لینے سے منع کردیا ہے . عدالت نے کہا ہے کہ لاہورمیں‌ لگے بل بورڈز کو غیر قانونی طور پر اتارنے کا حکم نہیں‌دیا جاسکتا . پنجاب آؤٹ ڈور ایسوسی ایشن نے عدالت سے تین ماہ کا وقت مانگا تھا کیونکہ کرونا وائرس کی وجہ سے حکومت نے لاک ڈاؤن کیا تھا . لاک ڈاؤن کی وجہ سے ہر چیز بند دی تھی تو پھر کس چیز کا ٹیکس مانگا جارہا ہے. عدالت نے ایسوسی ایشن کی درخواست پر سٹے آرڈر یا حکم امتناعی جاری کردیا ہے

واضح رہے کہ ایڈورٹائیزنگ ایجنسی کی جانب سے لاہور کی عدالت میں دائر درخواست میں کہا گیا تھا کہ لاہور میں مختلف جگہوں پر آؤٹ ڈور اشتہاری کاروبار کر رہے ہیں،لاہور کے مختلف مقامات پر سائن بورڈ لگا تے ہیں ،لاہور میں مختلف ایڈورٹائیزنگ ایجنسیاں ہمارے تحت کام کر رہی ہیں، اور اشتہارات کے لئے سائن بورڈ ،بل بورڈ لگانے کے لئے پی ایچ اے سے مختلف مقامات حاصل کیے تھے، کرونا وائرس کی وجہ سے اپریل ، مئی اور جون 2020 کے مہینے میں لاہور سمیت پورے صوبے میں مکمل لاک ڈاؤن نافذ تھا، اس عرصے کے دوران مدعی ایسوسی ایشن کا کاروبار مکمل طور پر بند ہوچکا ہے اور سائن بورڈز / بل بورڈ خالی ہوگئے تھے اور کوئی بھی ہمیں اشتہار دینے کو تیار نہیں تھا، اس وجہ سے ہماری تنظیم کو بڑے مالی نقصان کا سامنا کرنا پڑا۔


لاک ڈاون دور کے دوران حکومت پنجاب نے صرف گروسری اسٹورز اور میڈیکل اسٹورز کو اپنا کاروبار چلانے کی اجازت دی ، حکومت نے لاک ڈاؤن کی مدت کے دوران پنجاب کے مختلف شعبوں کو ٹیکس میں چھوٹ دی اس سلسلے میں خبریں شائع ہوچکی ہیں۔، مدعی کی تنظیم کو بھی لاک ڈاؤن کے دوران ٹیکس سے مستثنیٰ کا مستحق ہے لیکن مدعا علیہ نمبر 1 اور 2 لاک ڈاؤن مدت کے دوران ٹیکس میں چھوٹ دینے کے لئے تیار نہیں ہیں یعنی اپریل ، مئی اور جون 2020 میں ہمیں ٹیکس سے استثنیٰ نہیں دیا جا رہا ، اور فریق کی جانب سے دھمکیاں دی جا رہی ہیں

Leave a reply