پھنسے ہوئے صحافی نے اپنی روداد سنا دی

قصور
صحافی کو پھنسا دیا گیا صحافی نے ساری روداد بیان کر دی
تفصیلات کے مطابق چونیاں کے صحافی نے اپنے پھنسنے کی روداد بیان کرتے ہوئے کہ کی میں رانا اکرم چونیاں ظہیر آباد کالونی کا رہائشی ہوں اور شعبہ صحافت سے بھی وابسطہ ہوں چند ماہ قبل میرا احسان الہی طلحہ مبین ولد انور سے معمولی جھگڑا ہوا تھا اس کی وجہ سے احسان اور طلحہ نے ایک موٹر سائیکل چوری کی نامعلوم درخواست 10/7/2020کو تھانہ سٹی میں گزاری اور اگلے ہی دن طلحہ نے11/7/2020کو مجھے نامزد کر دیا اس کے بعد میں تفتیش کیلئے تھانہ حاضر ہوتا رہا اور پولیس نے میرٹ پر تفتیش کرتے ہوئے احسان الہی طلحہ مبین ولد انور کو جھوٹا ٹھہرایا اس کے بعد 22/7/2020 کو ایک اور نامعلوم درخواست دے کر ایف آئی آر درج کروا دی گئی تقریبا چار ماہ بعد پھر مجھے نامزد کر کے مجھے حراساں کر نا چاہتے ہیں یہ مقدمہ اور درخواست جھوٹ پر مُبنی ہیں اور مجھے سوچی سمجھی سکیم کے تحت پھنسایا جا رہا ہے میری ڈی پی او قصور عمران کشور صاحب ، ڈی ایس پی چونیاں خالد اسلم صاحب ، اور تھانہ سٹی چونیاں کے ایس ایچ او یاسر علی صاحب سے اپیل ہے کہ میرے خلاف نامزد کئے گئے جھوٹے بے بنیاد اور من گھڑت مقدمہ کو فوری خارج کیا جائے اور جھوٹی درخواست کو داخل دفتر کرکے پولیس کو گمراہ کرکے جھوٹے مقدمات درج کروانے پر احسان الہی وغیرہ کیخلاف فوری قانونی کاروائی عمل میں لائی جائے

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.