fbpx

پی آئی اے کے ماہانہ خسارے میں کتنی کمی آئی، چیئرمین پی آئی اے کی وزیراعظم کو بریفنگ

پی آئی اے کے ماہانہ خسارے میں کتنی کمی آئی، چیئرمین پی آئی اے کی وزیراعظم کو بریفنگ

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق وزیراعظم عمران خان نے پی آئی اے میں جاری اصلاحات کے عمل پر اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ قومی ایئر لائن کی بحالی اور اسے منافع بخش ادارہ بنانا حکومتی ترجیحات میں شامل ہے۔

انہوں نے یہ بات جمعہ کو ہوا بازی ڈویژن سے متعلق معاملات پر اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کہی۔ اجلاس میں وزیر ہوا بازی غلام سرور، وزیرِ بحری امور سیّد علی حیدر زیدی، وزیرِ منصوبہ بندی اسد عمر، مشیر خزانہ ڈاکٹر عبدالحفیظ شیخ، معاون خصوصی ندیم بابر، معاون خصوصی سیّد ذوالفقار عباس بخاری، چیئرمین سرمایہ کاری بورڈ سیّد زبیر گیلانی، سیکرٹری  ہوا بازی شاہ رخ نصرت، چیئرمین پی آئی اے ایئر مارشل ارشد محمود ملک و دیگر سینئر افسران نے شرکت کی۔

اجلاس میں ہوا بازی ڈویژن سے متعلق معاملات خصوصاً پاکستان انٹرنیشنل ایئر لائنز میں حالیہ اصلاحات کے ثمرات اور ملکی ہوائی اڈوں کے بہتر انتظام کے حوالے سے بات چیت کی گئی۔ چیئرمین پی آئی اے ایئر مارشل ارشد محمود نے اجلاس کو بتایا کہ قومی ایئرلائن میں اصلاحات کے خاطر خواہ ثمرات سامنے آنا شروع ہو گئے ہیں۔ جہاں ایک طرف قومی ایئر لائنز کی پروازوں میں 47 پروازوں کا اضافہ کیا گیا ہے اور 2 نئے جہاز پی آئی اے فلیٹ میں شامل کئے گئے ہیں وہاں پی آئی اے کے ماہانہ خسارے میں خاطر خواہ کمی آئی ہے۔ اس کارکردگی میں مزید بہتری لانے اور ادارے کو منافع بخش ادارہ بنانے کےلئے پی آئی اے کی موجودہ انتظامیہ شب و روز مصروفِ عمل ہے۔

پی آئی اے کا ایک اور کارنامہ، وزیراعظم سٹیزن پورٹل میں شکایت درج

ایک سال گرائونڈ رہنے کے بعد پی آئی اے کا اے تھری ٹوئنٹی اڑان کے قابل

وزیرِاعظم نے پی آئی اے میں جاری اصلاحات کے عمل پر اطمینان کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ قومی ایئر لائن کی بحالی اور اسے منافع بخش ادارہ بنانا حکومت کی ترجیحات میں شامل ہے۔ اجلاس میں ملکی ہوائی اڈوں کے بہتر انتظام اور مسافروں کو بین الاقوامی معیار کی سہولیات کی فراہمی کےلئے کئے جانے والے فیصلوں پر عملدرآمد میں پیشرفت اور مستقبل کے لائحہ عمل کا بھی جائزہ لیا گیا۔

وزیر اعظم عمران خان نے  کہاکہ پاکستان انٹرنیشنل ایئرلائن نہ صرف قومی ادارہ ہے بلکہ ملک کی پہچان بھی ہے، ماضی کی منافع بخش ایئرلائن بدانتظامی،غفلت کی وجہ سےمشکلات کاشکارہوا، حکومت پی آئی اے کومنافع بخش اورفعال ادارہ بنانے کے لیے کوشاں ہے،

پی آئی اے نے 10 کروڑ 65 لاکھ روپے مالیت کا کھانا ضائع کردیا، یہ انکشاف آڈیٹرجنرل نے اپنی رپورٹ میں کیا ہے،

پی آئی اے میں اصلاحات اور کفایت شعاری کے ثمرات آنا شروع ہوگئے، رواں مالی سال کے پہلے6ماہ میں قومی ایئرلائن کے خسارے میں نمایاں کمی واقع ہوئی ہے۔جنوری 2019 سے جون 2019 تک پی آئی اے کی کارکردگی میں شاندار اضافہ ریکارڈ کیا گیا ہے۔اعداد و شمار کے مطابق پی آئی اے کے خسارے میں بجٹ کے مقابلے میں36فیصد کمی ہوئی، پی آئی اے کا آپریٹنگ خسارہ 21ارب سے کم ہوکر5ارب رہ گیا۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.