پرائس کنٹرول و فوڈ اتھارٹی کے ستائے تاجر

قصور
محکمہ پنجاب فوڈ اتھارٹی اور پرائس کنٹرول کمیٹی نے قصور کے تاجروں سے ناروا سلوک کرکےمنظور نظر افراد کو نوازنیں اور رشوت نہ دینے والے دوکانداروں کو آئے دن بے جا جرمانوں سے ذہنی پریشانی میں مبتلا کر دیا جبکہ سستا دودھ فروخت کرنے پر پنجاب فوڈ اتھارٹی کے جرمانے
تفصیلات کے مطابق محکمہ پنجاب فوڈ اتھارٹی قصور کا تاجروں سے مبینہ ناروا سلوک زور پکڑ گیا ہے منظور نظر افراد کو نوازنیں اور رشوت نہ دینے والے دوکانداروں کو آئے دن بےجا جرمانوں کئے جانے لگے جس سے تاجر شدید ذہنی پریشانی میں مبتلا ہو گئے ہیں متعلقہ ملازمین بلا عذر دوکانداروں سے معیاری دودھ کے سیمپلز لیکر موقع پر چیک کرنیکی بجائے من پسند جگہ پر لے جا کر متعلقہ دوکانداروں کی عدم موجودگی میں خود ساختہ رزلٹ بنا کر بلیک میل کرتے ہیں اور اپنی مرضی کے مطابق جرمانے ڈال رہے ہیں اوپر سے ستم ظریفی یہ ہے کہ محکمہ پرائس کنٹرول کمیٹی کیطرف سے حکم ملتا ہے دودھ 70 روپے کلو سرکاری ریٹ پر فروخت کیا جائے جبکہ دوکاندار 80 روپے خود خرید رہے ہیں سرکاری ریٹ پر سستہ دودھ فروخت کرنے پر محکمہ پنجاب فوڈ اتھارٹی غیر معیاری کے بہانے دھڑا دھڑ جرمانے کررہے ہیں اور معیاری دودھ فروخت کرنے پر پرائس کنٹرول کمیٹی سرکاری ریٹ سے زیادہ پر جرمانے کر رہے ہیں جس کیوجہ سے شہر میں دودھ کا کاروبار بری طرح متاثر ہورہا ہے متاثرین ایک عجیب و غریب ذہنی پریشانی میں مبتلا ہیں انہوں نے حکام بالا سے فوری کاروائی انکوائری کا مطالبہ کیا ہے اگر محکمہ پنجاب فوڈ اتھارٹی اور پرائس کنٹرول کمیٹی نے آپنی روش نہ بدلی تو تاجران انکے خلاف ہڑتال کی کال دینگے

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.