یہ کیا تماشا ہے ، لوگ نجی سکولوں کے ہاتھوں لٹ رہے ہیں‌اور سیکرٹری ایجوکیشن کو پرواہ تک نہیں ، عدالت

لاہور :یہ کیا تماشا ہےکہ لوگ پرائیویٹ سکولوں کے ہاتھوں لٹ رہے ہیں‌اور سیکرٹری ایجوکیشن کو پرواہ تک نہیں‌، عدالت بلاتی ہے تو آتے نہیں‌، کیوں نہ عدالت سیکرٹری ایجوکیشن کو گرفتار کرکے عدالت پیش کرنے کے احکامات صادر کردے ، لاہورہائی کورٹ سخت برہم

ذرائع کے مطابق آج پھر لاہورہائی کورٹ میں نجی سکولوں میں اضافی فیسوں کی وصولی کے خلاف دائر درخواست کی سماعت ہوئی لیکن اس روز بھی سیکرٹری ایجوکیشن عدالت کے حکم کے باوجود حاضر نہیں ہوئے جس پر عدالت بہت زیادہ برہم ہوئی اور کہا کہ کل اگر سیکرٹری ایجوکیشن عدالت کے روبرو پیش نہ ہوئے تو پھر ان کو گرفتار کرکے پیشن کرنے کا حکم دیا جاسکتا ہے،

بس ایک وقت مقرر ہے ! یمنیٰ زیدی نے تو یہ کہہ کر حد ہی کردی

باغی ٹی وی کے مطابق آج سماعت کے دوران بڑے دلچسپ جملے سننے کو ملے ، ایک موقع پر عدالت نے کہا کہ کیوں آج سیکرٹری دفتر نہیں آئے، عدالت تونوبجے لگتی ہے آپ اب کیاکرنےآئے ہیں ،کیا عدالتیں آپ کے دفاتر ہیں جہاں آپ چکردیتے رہیں، عدالت

عدالت کو بتایا گیا کہ سیکشن سات پرعمل درآمد کے لئے کیا اقدامات کئے جارہے ہیں جس پر عدالت نے کہا کہ اگر اتنے زیادہ کامے ہیں‌تو پھر آج یہاں لوگوں کو نہ آنا پڑتا، ایک موقع پر جب عدالت نے پوچھا کہ سیکرٹری ایجوکیشن کہاں ہے تو ڈپٹی سیکرٹری نے ٹالتے ہوئے جواب دیا کہ کنفرم نہیں پتہ کہ سیکرٹری سکولزکہاں ہیں ، عدالت کو بتایا گیا کہ پچھلے دنوں سیکرٹری سکولز وزیر اعلی کے ساتھ مسلسل میٹنگز میں مصروف رہے

مریض سے فیس لیتے ہوئے ترس نہیں آتا اور ٹیکس دینے کی بات ہی نہیں‌کرتے ، چیئرمین سخت برہم

ذرائع کے مطابق آخر میں عدالت نے پھر سخت ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ خدارا خوف کریں لوگ رسو ہوگئے ان پرائیویٹ سکولوں کے ہاتھوں اور سیکرٹری ایجوکیشن ٹس سے مس نہیں ہوئے ، لگتا ہے کہ یہاں جو مرضی کوئی کرے اس کو کوئی پوچھنے والانہیں ،درخواست گزار نے آخر میں پھر درخواست کی کہ جناب پرائیویٹ سکولوں نے مختلف انداز سے لوٹنا شروع کیا ہوا ہے ، یہ سکول اضافی فیسوں کے نام بدل کروالدین سے ہرماہ ہزاروں روپے بٹورے جارہے ہیں، مہربانی فرما کر ہماری جان بخشی کرائی جائے

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.