مسیحی جوڑے کو زندہ جلانے کا واقعہ، پانچ مجرموں کی سزائے موت برقرار

سانحہ کوٹ رادھا کشن کیس میں عدالت نے پانچ مجرموں کی پھانسی کی سزاوں کے خلاف اپیل خارج کر دی

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق قصور کے علاقے کوٹ رادھا کشن کیس کے حوالہ سے لاہور ہائیکورٹ نے فیصلہ سنا دیا ہے. عدالت نے 8 مجرموں میں ست تین کی اپیلیں منظور کرتے ہوئے انہیں رہا کرنے کا حکم دیا جبکہ پانچ کی سزائے موقت برقرار رکھی.عدالت نے واقعہ میں ملوث مجرم ریاض، عرفان، مہدی خان اور دیگر کی سزائے موت برقرار رکھی، جب کہ حنیف، حافظ، اشتیاق کو بری کرنے کا حکم دے دیا۔جسٹس محمد قاسم خان کی سربراہی میں دو رکنی بنچ نے محفوظ کیا گیا فیصلہ سنایا، مجرموں نے انسداد دہشت گردی کی عدالت کے فیصلے کو لاہور ہائیکورٹ میں چیلنج کیا تھا

واضح رہے کہ انسداد دہشت گردی عدالت نے پانچ مجرمان کو 4، 4 مرتبہ سزائے موت سنائی تھی، مجرم حارث، ارسلان اور منیر کو 2، 2 سال قید کی سزا سنائی گئی تھی۔ 2014 میں پنجاب کے علاقے کوٹ رادھا کشن میں مسیحی جوڑے کو قرآن مجید کی بے حرمتی کے الزام میں تشدد کا نشانہ بنانے کے بعد زندہ جلا دیا گیا تھا.

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.