ہمت ہے تو کھرا سچ کا جواب دو، پروپیگنڈہ مبشر لقمان کو حقائق بیان کرنے سے نہیں روک سکتا

ہمت ہے تو کھرا سچ کا جواب دو، پروپیگنڈہ مبشر لقمان کو حقائق بیان کرنے سے نہیں روک سکتا

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق مبشر لقمان کا کھرا سچ پی ٹی آئی کو ہضم نہ ہو سکا ۔فیک آڈیو وائرل کرنے کی کوشش کی گئی ۔ آڈیو میں واضح سنا جا سکتا ہے کہ آواز مبشر لقمان کی نہیں بلکہ کسی اور کی ہے

مبشر لقمان پاکستان کے واحد اینکر ہیں جو ہمیشہ کھرا سچ میں سچ بولتے آئے اور حکمران ہوں یا اپوزیشن سب کو آئینہ دکھایا ۔ تحریک انصاف کے چئیرمین عمر ان خان خود اس بات کا اعتراف کر چکے ہیں کہ مبشر لقمان ایک بہادر صحافی ہے جو طاقتوروں کی کرپشن کو بے نقاب کرتا یے۔ حقیقت بھی یہی ہے کہ مبشر لقمان نے ہر دور میں ہمیشہ سچ کا علم بلند کیا اور حکمران خواہ وہ کسی بھی پارٹی سے ہوں انکی کرپشن کو عوام کے سامنے لائے حقیقی چہرہ عوام کو دکھایا ۔ عمران خان کے اقتدار میں آنے سے پہلے مبشر لقمان انکے لئے ہیرو تھے اور جلسوں میں وہ مبشر لقمان کی مثالیں دیتے تا ہم جب عمران خان کی کرپشن ۔فرح گوگی کے ڈاکے۔ عثمان بزدار کے کارنامے۔ بشری بی بی کی رشوت خوریاں مبشر لقمان ثبوتوں کے ساتھ منظر عام پر لائے تو پی ٹی آئی کی سوشل میڈیا ٹیم نے مبشر لقمان کیخلاف پروپیگنڈہ شروع کر دیا ۔

اب مبشر لقمان کی تحریک انصاف کے ہی ایک سوشل میڈیا ایکٹوسٹ نے آڈیو ٹویٹ کی ہے جو فیک ہے۔ مبشر لقمان کا وی لاگ سننے والے بھی اس بات کی تصدیق کر سکتے ہیں کہ اس آڈیو میں آواز مبشر لقمان کی نہیں بلکہ کسی اور کی ہے اور اس آڈیو کو مبشر لقمان سے جوڑا گیا ہے ۔ ایسا پہلی بار نہیں ہوا پی ٹی آئی کے سوشل میڈیا ایکٹوسٹ پہلے بھی ایسی مذموم حرکتیں کر چکے ہیں۔ کھرا سچ میں دلیل کے ساتھ مبشر لقمان نے بات کی جواب نہ ملا تو پی ٹی آئی والوں نے پروپیگنڈہ شروع کیا ۔ یوٹرن ماسٹر اور بات بات پر اپنا بیان بدلنے کا ریکارڈ بدلنے والے عمران خان کی سوشل میڈیا ٹیم یہ نہیں جانتی کہ مبشر لقمان کو ایسے مذموم ہتھکنڈوں سے نہیں ڈرایا جا سکتا۔ آڈیو تو عمران خان کی سامنے آئیں جو حقیقی بھی ہیں اور انہیں کوئی جھٹلا بھی کہیں سکا ۔

فیک آڈیو پر مبشر لقمان نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹویٹر پر ٹویٹ کرتے ہوئے کہا ہے کہ احمق ۔۔۔فیک آڈیو پھیلا رہے ہو انتظار کرو تمہاری صحیح آڈیو آنیوالی ہے

ریاست مدینہ کے دعویدار عمران خان کی سوشل میڈیا ٹیم کو سچ سننے اور برداشت کرنے کی ہمت نہیں ۔ توشہ خانہ میں ملنے والے قیمتی گھڑی چوری کرنے سے لے کر فرح گوگی کے کارناموں تک ریاست مدینہ احتساب کے نام پر جو کچھ ہوتا رہا وہ سب سامنے آ چکا ہے۔اپوزیشن کو جیلوں مین ڈالنے کے لیے طیبہ نامی خاتون کی ویڈیو کے ذریعے چیئرمین نیب کو بلیک میل کرنے کا گھناونا کردار بھی سامنے آ چکا ہے۔ حریم شاہ کے ذریعے مخالفین کی کردار کشی کا سلسلہ بھی بے نقاب ہو چکا ہے۔ پی ٹی آئی کی سوشل میڈیا ٹیم جو مرضی کر لے مبشر لقمان کے کردار پر انگلی نہیں اٹھا سکتے ۔ مبشر لقمان نے عمران خان کو کچھ دیا ہی ہے لیا کچھ نہیں۔ اگر ہمت ہے تو عمران خان سمیت پی ٹی آئی کی ساری قیادت سوشل میڈیا ٹیم مبشر لقمان کے خلاف ایک ثبوت سامنے لائیں مبشر لقمان تو پی ٹی آئی کی ایک نہیں درجنوں کرپشن کے واقعات ثبوتوں کے ساتھ سامنے لا چکے ہیں انکا کوئی جواب نہیں اسلئے ایسی مذموم حرکتیں پی ٹی آئی کی طرف سے کی جا رہی ہیں ۔

صحافت پیغمبری پیشہ ہے اور اس پیشے کے ساتھ انصاف یہی ہے کہ ہمیشہ سچ بولا جائے اور جو دیکھا یا سنا ہے اسے من و عن بیان کیا جائے۔ مبشر لقمان ہہی کام کر رہے ہیں کسی کے دباو میں آئے بغیر کھرا سچ میں سب کو بے نقاب کر رہے ہیں ۔ پروپیگنڈہ گالم گلوچ یہ پی ٹی آئی کی سوشل میڈیا ٹیم کی پہچان بن چکی۔ وہ یہ بھول چکے کہ مبشر لقمان نام ہے جراتمندانہ اور بیباک صحافت کا۔ سچ بولنے سے انہیں کسی قیمت پر نہیں روکا جا سکتا