fbpx

چودھری شجاعت کا خط اصلی تھا؟ مونس الہیٰ نے بڑا دعویٰ کر دیا

چودھری شجاعت کا خط اصلی تھا؟ مونس الہیٰ نے بڑا دعویٰ کر دیا

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق ق لیگی رہنما مونس الہیٰ نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے کہا کہ بینکنگ کورٹ سے ضمانت منظور کرنے پر اللہ کا مشکور ہوں،

مونس الہیٰ کا کہنا تھا کہ خط سے متعلق چودھری شجاعت سے بات ہوئی تھی ، میں نے چودھری شجاعت سے پوچھا کہ آپ نے کوئی خط لکھا چودھری شجاعت نے کہا جی انہوں نے خط لکھا ہے ،چودھری شجاعت نے خط میں ق لیگ کو کسی بھی پارٹی کو ووٹ نہ دینے کا کہا میں نے کہا کہ اسکا مطلب کہ پرویزالہٰی الیکشن نہیں جیتیں گے ،چودھری شجاعت نے کہا کہ پرویز الہٰی کے وزیر اعلیٰ بننے کا خواہاں ہوں لیکن عمران خان کے ساتھ نہیں ،مجھے لگ رہاتھا کہ چودھری شجاعت پر کوئی بڑا دباو ہے ہم نے ن لیگ اور اتحادیوں کا نہیں، صرف عمران خان کا وزیراعلی بننا ہے۔

قبل ازیں بیکنگ جرائم کورٹ نے مونس الہیٰ کی عبوری ضمانت کنفرم کر دی بینکنگ جرائم کورٹ نے فریقین وکلا کے دلائل سننے کے بعد فیصلہ سنایا

گزشتہ روز وزیراعلیٰ کے الیکشن میں چودھری شجاعت کے ایک خط نے پرویز الہیٰ کے وزارت اعلیٰ کی کرسی سے نہ صرف دور کر دیا بلکہ یہ بھی امکان ہے کہ پارٹی چیئرمین کی ہدایات کے برعکس ووٹ دینے پر ق لیگ کے تمام اراکین ڈی سیٹ ہو جائیں گے

دوسری جانب سیکرٹری پنجاب اسمبلی محمد خان بھٹی کا کہنا ہے کہ ڈپٹی اسپیکر کی رولنگ سے متعلق معاملہ عدالت میں ہے،ڈپٹی اسپیکر کی رولنگ سے متعلق معاملے پر عدالت ہی فیصلہ کرے گی، مجھے سپریم کورٹ کی طرف سے کوئی نوٹس موصول نہیں ہوا،

فرح خان کیسے کرپشن کر سکتی ؟ عمران خان بھی بول پڑے

سینیٹ اجلاس میں "فرح گوگی” کے تذکرے،ہائے میری انگوٹھی کے نعرے

فرح خان بنی گالہ کی مستقل رہائشی ،مگرآمدروفت کا ریکارڈ نہیں، نیا سیکنڈل ،تحقیقات کا حکم

ڈپٹی اسپیکرکی رولنگ کے خلاف پی ٹی آئی کی درخواست قابل سماعت قرار،نوٹسز جاری

 پرویز الہٰی اب ق لیگ سے باہر ہیں وہ بنی گالہ جائیں اور پی ٹی آئی میں شامل ہوجائیں

وفاقی حکومت نے لاہور اور راولپنڈی میں رینجرز تعینات کرنے کی منظور ی دے دی

واضح رہے کہ گزشتہ روز پنجاب اسمبلی میں وزیراعلیٰ کے الیکشن ہوئے، پی ٹی آئی کے امیدوار نے 186 ووٹ حاصل کئے تا ہم ڈپٹی سپیکر نے چودھری شجاعت کے خط کا حوالہ دیتے ہوئے دس ووٹ مسترد کر دیئے ، جسکے بعد حمزہ شہباز وزیراعلیٰ منتخب ہو گئے، پی ٹی آئی نے ایوان میں احتجاج کے بعد کئی شہروں میں احتجاج کیا اور رات کو سپریم کورٹ میں درخواست دائر کی، پی ٹی آئی کی درخواست عدالت نے قابل سماعت قرار دے دی ہے