شادی شدہ افراد زیادہ خوش باش او ر صحت مند ہوتے ہیں یا تنہا زندگی گزارنے والے؟

شریک حیات کا ساتھ عمر بڑھنے کے ساتھ دماغ کو زیادہ تحفظ فراہم کرتا ہے۔
0
143

کیلیفورنیا: شادی کے بعد ایک خوشگوار زندگی صرف پریوں کی کہانیوں میں نہیں ہوسکتی ہے، یہ ڈیٹا میں بھی ہے۔

باغی ٹی وی: شادی شدہ افراد زیادہ خوش باش او ر صحت مند ہوتے ہیں یا تنہا زندگی گزارنے والے؟اس کا جواب کافی دلچسپ ہے اور سائنسی تحقیق کے مطابق شادی کرنے والے افراد تنہا رہنے والوں سے زیادہ خوش یا صحت مند نہیں ہوتے۔

امریکا کی کیلیفورنیا یونیورسٹی کی تحقیق میں شادی شدہ اور کنوارے افراد کی جسمانی اور ذہنی صحت کا تجزیہ کیا گیا تھا،تحقیق میں بتایا گیا کہ ایسے شواہد بہت کم ہیں جن سے ثابت ہوتا ہو کہ شادی سے طویل المعیاد بنیادوں پر لوگوں کی شخصیت اور صحت پر مثبت اثرات مرتب ہوتے ہیں۔

تحقیق کے مطابق ویسے تو مانا جاتا ہے کہ شادی صحت اور شخصیت کو بہتر بنانے کے لیے بہترین ہوتی ہے مگر اس حوالے سے شواہد ناکافی ہیں اکثر تحقیقی رپورٹس میں نتائج کو بڑھا چڑھا کر بیان کیا جاتا ہے مگر حقیقت کچھ مختلف ہے ڈپریشن، تنہائی، جسمانی صحت اور خوشی کے لحاظ سے کنوارے اور شادی شدہ افراد میں کچھ زیادہ فرق نہیں ہوتا، شادی کرنے سے طویل المعیاد بنیادوں پر صحت یا شخصیت میں نمایاں بہتری کا امکان بہت کم ہوتا ہے۔

اس تحقیق کے نتائج جرنل انسائیکلوپیڈیا آف مینٹل ہیلتھ میں شائع ہوئے۔

گیلپ پول کے مطابق، شادی شدہ بالغ افراد کسی بھی دوسرے رشتے کی حیثیت میں رہنے والوں سے کہیں زیادہ خوش ہیں، گیلپ کے پرنسپل اکانومسٹ، پول کے مصنف جوناتھن روتھ ویل نے کہا کہ کسی بھی طرح سے آپ ان ڈیٹا کا تجزیہ کرتے ہیں، ہمیں شادی شدہ ہونے کا کافی بڑا اور قابل ذکر فائدہ اس لحاظ سے نظر آتا ہے کہ لوگ اپنی زندگی کا کیسے جائزہ لیتے ہیں۔

2009 سے 2023 تک، ریاستہائے متحدہ میں 2.5 ملین سے زیادہ بالغوں سے پوچھا گیا کہ وہ اپنی موجودہ زندگی کی درجہ بندی کیسے کریں گے، جس میں صفر کو بدترین ممکنہ درجہ بندی ہے اور 10 سب سے زیادہ ہے۔ پھر محققین نے جواب دہندگان سے پوچھا کہ پانچ سالوں میں ان کی خوشی کی سطح کیا ہوگی؟

ترقی پزیر سمجھے جانے کے لیے، سروے کے مطابق، ایک شخص کو اپنی موجودہ زندگی کو سات یا اس سے اوپر اور اپنے متوقع مستقبل کو آٹھ یا اس سے اوپر کا درجہ دینا پڑتا ہے۔

اعداد و شمار کے مطابق، سروے کی مدت کے دوران، شادی شدہ افراد نے مسلسل اپنی خوشی کی سطح اپنے غیر شادی شدہ ہم منصبوں سے زیادہ بتائی، جو کہ سال کے لحاظ سے 12% سے 24% تک زیادہ ہے، سروے میں کہا گیا کہ جب محققین نے عمر، نسل، جنس اور تعلیم جیسے عوامل کو ایڈجسٹ کیا تب بھی فرق موجود تھا۔

تعلیم خوشی کی ایک مضبوط پیشن گوئی ہے، لیکن اعداد و شمار سے پتہ چلتا ہے کہ شادی شدہ بالغ افراد جنہوں نے ہائی اسکول میں تعلیم حاصل نہیں کی وہ گریجویٹ ڈگری کے حامل غیر شادی شدہ بالغوں کے مقابلے میں اپنی زندگی کا زیادہ بہتر انداز میں جائزہ لیتے ہیں۔

بریڈ فورڈ ولکوکس، سوشیالوجی کے پروفیسر اور ورجینیا یونیورسٹی میں نیشنل میرج پروجیکٹ کے ڈائریکٹر نے کہ”نسل ،عمر ، جنس اور تعلیم جیسی چیزیں اہم ہیں لیکن ایسا لگتا ہے کہ شادی ان چیزوں سے زیادہ اہمیت کی حامل ہوتی ہے جب بات آپ کی بہترین زندگی گزارنے کے اس طرح کے اقدام کی ہو،جیسا کہ ارسطو نے کہا کہ "ہم سماجی جانور ہیں، ہم جڑنے کے لیے سخت محنت کر رہے ہیں-

اس سے قبل فروری 2023 میں نارویجن انسٹیٹیوٹ آف پبلک ہیلتھ کی تحقیق میں دریافت کیا گیا کہ طلاق یافتہ اور زندگی بھر کنوارے رہنے والے افراد کے مقابلے میں طویل المعیاد عرصے تک شریک حیات کے ساتھ زندگی گزارنے والوں میں ڈیمینشیا کا خطرہ کم ہوتا ہے،تحقیق میں بتایا گیا کہ طلاق یافتہ اور کنوارے افراد میں ڈیمینشیا کی تشخیص کا امکان بالترتیب 50 اور 73 فیصد زیادہ ہوتا ہے۔

محققین نے دریافت کیا کہ شادی شدہ ہونے اور معمولی ذہنی مسائل کے خطرے کے درمیان تو ٹھوس تعلق نہیں مگر ڈیمینشیا کے خطرے میں کمی کے حوالے سے یہ تعلق واضح ہے شریک حیات کا ساتھ عمر بڑھنے کے ساتھ دماغ کو زیادہ تحفظ فراہم کرتا ہے۔

Leave a reply