fbpx

آئین کی پاسداری اور سربلندی کا عہد

یہ ایک حقیقت ہے کہ افواج پاکستان نہ صرف ملکی دفاع کی ہر ضرورت کو پورا کرنے کی پوری صلاحیت رکھتی ہے بلکہ اس کے لیے ہمہ وقت تیار رہتی ہے۔پاک فوج کے افسران اور جوانوں نے اقوام متحدہ کے امن مشن کے حصے کے طور پر علاقائی اور عالمی امن کے لیے قربانیاں دینے سے کبھی پیچھے نہیں ہٹے۔ حال ہی میں افریقی ملک کانگو میں اقوام متحدہ کے امن مشن میں خدمات انجام دیتے ہوئے پاک فوج کے افسران اور جوان فضائی حادثے میں شہید ہو گئے۔ پاک فوج ملک میں امن و امان برقرار رکھنے اور ریاست کے خلاف کسی بھی انتشار کو روکنے کے لیے اپنی بہترین پیشہ ورانہ صلاحیتوں کا استعمال کرتی ہے۔

حال ہی میں جنوبی وزیرستان میں دہشت گردوں کے خلاف سیکیورٹی فورسز کے آپریشن کے دوران دہشت گردوں کی فائرنگ سے ایک میجر اور ایک جوان شہید ہوگئے جب کہ سیکیورٹی فورسز نے دو دہشت گردوں کو جہنم واصل کیا۔اسی طرح شمالی وزیرستان میں دہشت گردوں نے فوجی قافلے پر حملہ کیا جس میں 7 اہلکار شہید جب کہ مقابلے میں 4 دہشت گرد بھی مارے گئے۔ وطن کے دفاع اور تحفظ کے لیے پاک فوج کے بے پناہ جذبے اور قربانیوں پر پوری قوم کو فخر ہے۔ ایک ایسے وقت میں جب ہماری سیاسی قیادت ایک دوسرے کے گریبانوں پر ہاتھ ڈالنے کی کوشش کر رہی ہے، یہ خوش آئند پیش رفت ہے کہ ملک کی عسکری قیادت نے پاکستانی افواج کو ملکی سیاسی معاملات سے لاتعلق رکھا ہوا ہے۔ انہوں نے ان کے ساتھ کھڑے ہونے کا عہد کیا اور سیاستدانوں سے کہا کہ وہ اپنے تنازعات اور مسائل اپنے اپنے فورم پر حل کریں۔ کچھ قوتوں نے ملک کے ریاستی اداروں کی توڑ پھوڑ کے لیے سوشل میڈیا کا سہارا لیا جس کا حکومت اور اداروں نے فوری اور سخت نوٹس لیا اور ان عناصر کے خلاف قانونی کارروائی شروع کی۔

آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ کی زیر صدارت فارمیشن کمانڈرز کانفرنس میں ریاستی اداروں اور عوام میں تقسیم پیدا کرنے کی پروپیگنڈہ مہم کا بھی نوٹس لیا گیا اور واضح پیغام دیا گیا کہ پوری فوج آئین اور قانون کی پاسداری کر رہی ہے۔ملکی سلامتی پر کبھی سمجھوتہ نہیں کیا جائے گا۔ خب دار کرنے کے بعد صورتحال میں کچھ بہتری آئی ہے لیکن شیطانی مہم جاری ہے۔ اس ساری صورتحال کا افسوس ناک پہلو یہ ہے کہ ملک کو غیر مستحکم کرنے کی دانستہ کوشش کی جارہی ہے۔ دوسری جانب پاک فوج کے ترجمان میجر جنرل بابر افتخار نے کہا کہ قومی سلامتی کمیٹی کے اعلامیے میں سازش کا کوئی ذکر نہیں ہے۔پاک فوج ملکی سلامتی اور دفاع کے لیے ہمہ وقت چوکس اور تیار ہے۔ عوام کی حمایت ہی فوج کی طاقت کا ذریعہ ہے اور اس کے خلاف کسی قسم کی سازش برداشت نہیں کی جائے گی۔ بے بنیاد بدتمیزی اور الزام تراشی کسی بھی طرح قابل قبول نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ اداروں کے خلاف منظم مہم چلائی جا رہی ہے جس کا مقصد عوام اور فوج کے درمیان خلیج پیدا کرنا ہے جو کامیاب نہیں ہو گی۔تاہم، ایسے الزامات کو روکنا چاہیے جو اداروں اور بین الاقوامی تعلقات کو نشانہ بنا کر سیاسی فائدہ حاصل کرنا چاہتے ہیں۔ اپوزیشن یا کسی بھی سیاستدان کو قانونی اور آئینی حدود میں رہتے ہوئے قانون کے خلاف مہم چلانے کا حق حاصل ہے لیکن حد سے تجاوز کرنا ملکی نظام کے لیے نقصان دہ ہو سکتا ہے۔

مسلح افواج کے ترجمان کی جانب سے قومی مسائل پر پریس بریفنگ ایسے وقت میں دی گئی جب کچھ ملک دشمن عناصر سوشل میڈیا کے ذریعے ملکی قیادت کے بارے میں گھناؤنا پروپیگنڈہ کر رہے ہیں جس سے عوام میں غلط فہمیاں پیدا ہو رہی ہیں۔ دوسری طرف بعض قومی معاملات پر بعض سیاسی جماعتیں ایسے تبصرے کر رہی ہیں جس سے اداروں کا امیج خراب ہو رہا ہے۔ لہٰذا اس صورتحال میں میجر جنرل بابر افتخار کی پریس کانفرنس سے عوام میں واضح پو گیا ہے کہ یہ محض الزامات ہیں۔ تشویش کی بات یہ ہے کہ تمام پارٹیوں کے سیاسی دھڑے معزز سابق فوجیوں کے جعلی آڈیو پیغامات اپ لوڈ کرنے کے لیے سوشل میڈیا کا استعمال کر رہے ہیں۔ سوشل میڈیا پر مسلح افواج پر بے جا تنقید سب سے زیادہ اقتدار جانے والی پارٹی کی جانب سے کی جا رہی ہے اور جھوٹ، پروپیگنڈہ میں اپنے لیڈر کی طرح انکے کارکنان نے بھی کوئی کسر باقی نہیں رکھی، پروپیگنڈہ اتنا کیا جاتا ہےکہ شاید اسکو لوگ سچ ماننے پر مجبور ہو جائیں، افواج پاکستان ملکی دفاع کی ضامن ہیں، ملکی سلامتی کے اداروں پر بے جا تنقید کرنا دشمنوں کے ایجنڈے کی تکمیل ہے، پاکستان جن حالات میں ہے ایسے میں پاک فوج کے شانہ بشانہ چلنے کی ضرورت ہے ، سیاست تو ہوتی ہی رہے گی لیکن خدارا اپنے سیاسی مفادات کے لئے اداروں کو بدنام کرنے والا کام چھوڑ دیں،

ایف اے ٹی ایف، بھارت کی پاکستان کو بلیک لسٹ کرنے کی سازش پاک فوج نے بنائی ناکام

فوج اور قوم کے درمیان خلیج پیدا کرنا ملک دشمن قوتوں کا ایجنڈا ہے،پرویز الہیٰ

سپریم کورٹ نے دیا پی ٹی آئی کو جھٹکا،فواد چودھری کو بولنے سے بھی روک دیا

عمران خان نے کل اداروں کے خلاف زہر اگلا ہے،وزیراعظم

عمران خان کے فوج اور اُس کی قیادت پر انتہائی غلط اور بھونڈے الزامات پر ریٹائرڈ فوجی سامنے آ گئے۔

القادر یونیورسٹی کا زمین پر تاحال کوئی وجود نہیں،خواجہ آصف کا قومی اسمبلی میں انکشاف

سیاسی مفادات کے لئے ملک کونقصان نہیں پہنچانا چاہئے

سافٹ ویئر اپڈیٹ، میں پاک فوج سے معافی مانگتی ہوں،خاتون کا ویڈیو پیغام