عالمی عدالت انصاف فلسطینیوں کی نسل کشی کو روکنے کیلئے فوری طور پر فیصلہ دے،او آئی سی

فلسطینیوں کے گھروں، صحت، تعلیمی اور مذہبی اداروں کو مکمل طور پر تباہ کرنا بڑے پیمانے پر نسل کشی کے مترادف ہے
0
127
OIC

اسلامی تعاون تنظیم (او آئی سی) نےاسرائیل کی جانب سے فلسطینی عوام کے خلاف نسل کشی کے جرم پر جنوبی افریقہ کی جانب سے عالمی عدالت انصاف میں دائر مقدمے کا خیر مقدم کیا ہے۔

باغی ٹی وی: او آئی سی نے اپنے بیان میں کہا ہے کہ اسرائیل، فسلطینی شہری آبادی کو اندھا دھند نشانہ بناتا ہے جس کے نتیجے میں ہزاروں فلسطینیوں کو شہید اور زخمی کیا گیا، ان فلسطینیوں میں زیادہ تر خواتین اور بچے شامل ہیں اسرائیل کا مقصد فلسطینیوں کو جبری طور پر بے گھر کرنا ہے، بنیادی ضروریات اور انسانی امداد سے محروم رکھنا ہے ، ان کے گھروں، صحت، تعلیمی اور مذہبی اداروں کو مکمل طور پر تباہ کرنا بڑے پیمانے پر نسل کشی کے مترادف ہے۔
https://x.com/OIC_OCI/status/1741376335488967026?s=20

نئے سال کے آغاز پر ہمیں فلسطینی بھائیوں اور بہنوں کو نہیں بھولنا چاہیئے،عارف علوی

او آئی سی نے عالمی عدالت انصاف سے استدعا کی ہے کہ وہ مقبوضہ فلسطینی علاقوں میں اسرائیلی دفاعی افواج کی طرف سے بڑے پیمانے پر کی جانے والی نسل کشی کو روکنے کے لئے فوری طور پر فیصلہ دے اور فوری اقدامات کرے۔

واضح رہے کہ 29 دسمبر 2023 کو جنوبی افریقا نے اسرائیل کیخلاف بین الاقوامی عدالت انصاف میں مقدمہ کیا تھا، دی ہیگ میں بین الاقوامی عدالت انصاف میں ایک درخواست دائر کی گئی درخواست میں کہا گیا تھا کہ اسرائیل نسل کشی کنونشن کے تحت اپنی ذمہ داریوں کی خلاف ورزی کر رہا ہےعدالت سے درخواست کی گئی کہ وہ فوری بنیادوں پر یہ اعلان کرے کہ اسرائیل نسل کشی کنونشن کے تحت اپنی ذمہ داریوں کی خلاف ورزی کر رہا ہے، ان ذمہ داریوں کی خلاف ورزی روکتے ہوئے تمام کارروائیاں فوری طور پر بند کرے اور متعدد متعلقہ اقدامات کرے۔

ایف بی آر نے ایف آئی اے کے ہدف سے زائد ٹیکس اکٹھا کر …

Leave a reply