امریکا نے پاکستان کو ایف 16 طیاروں کے سامان اورآلات فروخت کرنےکی منظوری دیدی

0
33

امریکی محکمہ خا رجہ نے پاکستان کو ایف 16 طیاروں کی مرمت کیلئے سامان اورآلات فروخت کرنےکی منظوری دے دی۔

باغی ٹی وی : بزنس انسائیڈر کے مطابق پینٹاگون نے بدھ کے روز کہا کہ امریکی محکمہ خارجہ نے 450 ملین ڈالر تک کے معاہدے کے تحت پاکستان کو F-16 طیاروں کی برقراری اور متعلقہ آلات کی ممکنہ فروخت کی منظوری دے دی ہے پینٹاگون نے کہا کہ اصل ٹھیکیدار لاک ہیڈ مارٹن کارپوریشن ہو گا۔

ڈیفنس سیکیورٹی کوآپریشن ایجنسی نے بدھ کو کانگریس کو اس ممکنہ فروخت کے بارے میں مطلع کرتے ہوئے مطلوبہ سرٹیفیکیشن فراہم کیا جس کے مطابق امریکی محکمہ خارجہ کی جانب سے حکومت پاکستان کو پاکستان ائیرفورس کی ایف 16 فلیٹ کیلئے متعلقہ اوزار اور سامان فروخت کرنے کی منظوری دی گئی ہے۔

دورہ پاکستان میں عالمی برادری سے بڑی امداد کی اپیل کروں گا،انتونیو گوتریش

رپورٹ کے مطابق پاکستان کی جانب سے ایف 16 طیاروں کی سسٹینمنٹ اور سپورٹ پروگرام کیلئے امریکی حکومت سے یہ مطالبہ کیا گیا تھا۔

2018 میں ٹرمپ نے پاکستان کو دی جانے والی تمام دفاعی اور سیکیورٹی امداد روکنے کےاعلان کے بعد پاکستان کو یہ پہلی بڑی سیکیورٹی امداد دی تھی اور یہ الزام لگایا تھا کہ اسلام آباد دہشت گردی کے خلاف جنگ میں اس کا شراکت دار نہیں ہے۔

امریکی حکومت نے پاکستان ایئرفورس کے F-16 پروگرام کوبرقراررکھنے کےلیےغیر ملکی فوجی فروخت کے مجوزہ کیس سے کانگریس کو مطلع کر دیا ہے۔ اسٹیٹ ڈپارٹمنٹ کے ترجمان نے کہا کہ پاکستان انسداد دہشت گردی کا ایک اہم پارٹنر ہے، اور دیرینہ پالیسی کے حصے کے طور پر، امریکہ امریکی نژاد پلیٹ فارمز کے لیے لائف سائیکل مینٹیننس اور پائیداری کے پیکیج فراہم کرتا ہے۔

پاکستان کا F-16 پروگرام امریکہ اور پاکستان کے وسیع تر دوطرفہ تعلقات کا ایک اہم حصہ ہےمجوزہ فروخت پاکستان کی اپنے F-16 کو برقرار رکھتے ہوئے موجودہ اور مستقبل کے انسداد دہشت گردی کے خطرات سے نمٹنے کی صلاحیت کو برقرار رکھے گی۔ ایک سوال کے جواب میں ترجمان نے مزید کہا کہ F-16 طیارے پاکستان کو دہشت گردی کے خلاف کارروائیوں کی حمایت کرنے کی اجازت دیتا ہے اور ہم توقع کرتے ہیں کہ پاکستان تمام دہشت گرد گروپوں کے خلاف مستقل کارروائی کرے گا۔

امریکہ فی الفورتائیوان کی فوجی مدد کرنےسے بازآجائے:چین کی امریکہ کوسخت وارننگ

کانگریس کے نوٹیفکیشن کے مطابق، مجوزہ فروخت میں کوئی نئی صلاحیت، ہتھیار یا گولہ بارود شامل نہیں ہے۔

اس میں کہا گیا ہے کہ پاکستان نے ڈپلیکیٹ کیس کی سرگرمیوں کو کم کرکے اور اضافی مسلسل سپورٹ عناصر کو شامل کرکے پاک فضائیہ کے F-16 بیڑے کی مدد کے لیے سابقہ ​​F-16 برقرار رکھنے اور سپورٹ کیسز کو مضبوط کرنے کی درخواست کی ہے۔

F-16 ایئر کرافٹ سٹرکچرل انٹیگریٹی پروگرام، الیکٹرانک کمبیٹ انٹرنیشنل سیکیورٹی اسسٹنس پروگرام، انٹرنیشنل انجن مینجمنٹ پروگرام، انجن کے اجزاء کی بہتری کے پروگرام، اور دیگر تکنیکی کوآرڈینیشن گروپس میں پاکستان کو 450 ملین امریکی ڈالر کی غیر ملکی فوجی فروخت؛ ہوائی جہاز اور انجن ہارڈویئر اور سافٹ ویئر میں ترمیم اور سپورٹ اور ہوائی جہاز اور انجن کے اسپیئر ریپیر/ریٹرن پارٹس۔

امریکی فوج کےمیزبان ممالک کو ایران کا تحریری انتباہ

پینٹاگون نےکہا کہ یہ مجوزہ فروخت امریکہ کی خارجہ پالیسی اور قومی سلامتی کے مقاصد کی حمایت کرے گی جس سے پاکستان کو دہشت گردی کے خلاف جاری کوششوں اور مستقبل کی ہنگامی کارروائیوں کی تیاری میں امریکہ اور شراکت دار افواج کے ساتھ باہمی تعاون کو برقرار رکھنے کی اجازت ملے گی۔

مجوزہ فروخت پاکستان کے F-16 طیارے کی برقراری کو جاری رکھے گی، جس سے پاکستان کی مضبوط فضائی سے زمینی صلاحیت کے ذریعے انسداد دہشت گردی کی کارروائیوں میں مدد کرنے کی صلاحیت میں بہتری آئے گی۔اس نے کہا کہ پاکستان کو ان مضامین اور خدمات کو اپنی مسلح افواج میں شامل کرنے میں کوئی دشواری نہیں ہوگی۔

کانگریس کے نوٹیفکیشن کے مطابق اس آلات اور مدد کی مجوزہ فروخت سے خطے میں بنیادی فوجی توازن میں کوئی تبدیلی نہیں آئے گی-

سکھوں کیلئےعلیحدہ ملک "خالصتان” کے قیام پر کینیڈا میں ریفرنڈم،مہم کی…

Leave a reply