عالمی اسٹیبلشمنٹ اور سابقہ حکمران جرم میں شریک،امیر جماعت اسلامی سینیٹر سراج الحق

لاہور05فروری 2021ء
امیر جماعت اسلامی سینیٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ پاکستانی حکمرانوں نے بھارت کے ساتھ سودا کر لیا کہ سری نگر تمھارا، مظفرآباد ہمارا۔ عالمی اسٹیبلشمنٹ کے کہنے پر کشمیر پر پسپائی اختیار کی گئی۔سابقہ حکمران بھی اس جرم میں برابر کے شریک ہیں۔ گلگت بلتستان کو الگ صوبہ بنا کر سازش کی گئی۔ مقبوضہ وادی میں مظلوم و بے کس کشمیریوں پر ظلم و بربریت کے پہاڑ گرائے جارہے ہیں مگر پاکستان کے حکمرانوں اور عالمی برادری کا ضمیر سویا ہوا ہے۔ کشمیر کی مائیں، بہنیں، بیٹیاں امت مسلمہ کو پکار رہی ہیں مگر ان کی آہیں کسی کو سنائی نہیں دے رہیں۔ دہلی کے فاشسٹ حکمران سن لیں کشمیر آزاد ہوکر رہے گا۔ مقبوضہ کشمیر کا ایک ایک چپہ ہمارا، ایک انچ زمین سے دستبردار نہیں ہوں گے۔ ان خیالات کا اظہار انھوں نے لاہور مال روڑ پر یوم یکجہتی کشمیر کے موقع پر نکالی گئی ریلی کے شرکا سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ ریلی میں خواتین، بچوں، بوڑھوں سمیت زندگی کے تمام طبقات سے تعلق رکھنے والے افراد نے ہزاروں کی تعداد میں شرکت کی۔ سینیٹر سراج الحق نے اس موقع پر اس عہد کا اعادہ کیا کہ پاکستان کے بائیس کروڑ عوام زندگی کے آخری لمحے اور خون کے آخری قطرے تک کشمیریوں کی جدوجہد آزادی میں ان کے شانہ بشانہ کھڑے ہیں۔ دیگر مقررین اور سٹیج پر موجود قائدین میں جاوید قصوری، قیصر شریف، محمد اصغر، ذکراللہ مجاہد اور آصف لقمان قاضی شامل تھے۔ ریلی کا آغاز دس بجے ہوا اور ساڑھے بارہ بجے کے قریب آزادی کشمیر کے لیے دعا کے بعد اس کا اختتام ہوا۔ شرکا نے پاکستان، آزاد کشمیر اور جماعت اسلامی کے جھنڈے اور کتبے اٹھائے ہوئے تھے جن پر آزادی کشمیر کے حق میں نعرے درج تھے۔
سینیٹر سراج الحق نے خطاب کرتے ہوئے ایک دفعہ پھر عالمی برادری کو یاد دلایا کہ اقوام متحدہ میں کشمیریوں کے حق خوداردیت کے حق میں بے شمار قراردادیں پاس ہوئیں ہیں لہٰذا اسے یہ ذمہ داری ادا کرنی پڑے گی اور کشمیر آزاد ہو کر رہے گا۔ ان کا کہنا تھا کہ کشمیر ایٹمی طاقتوں روس، بھارت، چین اور پاکستان کے درمیان گھرا ہوا علاقہ ہے اور اس کے دوسری طرف افغانستان ہے جس نے دو ایٹمی طاقتوں کو شکست دی۔ عالمی برادری کا فرض ہے کہ وہ اس مسئلہ کو سنجیدگی سے لے اور بھارت کی مقبوضہ وادی میں خون کی ہولی بند کرائے۔ اقوام متحدہ، او آئی سی اور عالمی حقوق کی تنظیمیں بھارت پر زور دیں کہ وہ کشمیر کی خصوصی حیثیت کے قانون کو ختم کرے اور وہاں استصواب رائے کرائے۔ انھوں نے اس امر پر نہایت برہمی کا اظہار کیا کہ کشمیر دنیا کی سب سے بڑی جیل بن چکا ہے، وہاں ہزاروں کشمیریوں پر جیلوں میں شدید تشدد ہورہا ہے۔ تمام کشمیری قیادت گھروں اور جیلوں میں قید ہے مگر دنیا کے حکمرانوں کا ضمیر بالکل مردہ ہو چکا ہے۔ انھوں نے پاکستانی حکمرانوں کی مسئلہ کشمیر پر زبانی جمع خرچ کی پالیسی کو بھی شدید تنقید کا نشانہ بنایا۔ انھوں نے کہا حکمران مودی حکومت کے پانچ اگست کے ظالمانہ اقدام کو ڈیڑھ سال کا عرصہ گزر جانے کے بعد بھی جرأت مندانہ موقف اختیار نہیں کرسکے۔ نام نہاد بڑی سیاسی جماعتوں نے بھی چپ سادھ رکھی ہے اور حقیقت میں وہ اس جرم میں برابر کی شریک ہیں کیونکہ اپنے دور حکومت میں بھی انھوں نے کشمیر کی آزادی کے لیے کچھ نہیں کیا۔ تاہم انھوں نے کشمیری عوام کو یقین دلایا کہ پوری پاکستانی قوم ان کی پشتیبان ہے۔ کشمیر پر آزادی کا سورج جلد طلوع ہو گا۔
دریں اثنا جماعت اسلامی کے زیراہتمام ملک بھر میں جلسے جلوس اور ریلیاں نکالی گئیں جن میں لاکھوں کی تعداد میں عوام نے شرکت کی اور کشمیریوں کے ساتھ والہانہ عقیدت و محبت کا اظہار کیا۔ کراچی میں نکالی گئی ریلی میں ہزاروں کی تعداد میں پرجوش عوام نے شرکت کی۔ شرکا سے نائب امیر جماعت اسلامی لیاقت بلوچ، امیر صوبہ سندھ محمد حسین محنتی اور امیر کراچی حافظ نعیم الرحمن نے خطاب کیا۔ سیکرٹری جنرل جماعت اسلامی امیرالعظیم نے منڈی بہاؤالدین میں ایک بڑی ریلی سے خطاب کرتے ہوئے کشمیری قیادت اور عوام کو مودی حکومت کے ظلم وجبر کے سامنے ڈٹے رہنے اور اپنے لہو سے آزادی کی تاریخ رقم کرنے پر شاندار الفاظ میں خراج عقیدت پیش کیا۔  
اسلام آباد میں نائب امیر جماعت اسلامی میاں محمد اسلم اور ممبر قومی اسمبلی عبدالاکبر چترالی کی سربراہی میں ریلی نکالی گئی۔ نائب امراء جماعت ڈاکٹر معراج الہدیٰ صدیقی نے سکھر میں جبکہ راشد نسیم نے میرپور خاص میں ریلیوں کی قیادت کی۔ نائب امیر اور سابق ایم این اے اسد اللہ بھٹو نے نواب شاہ میں جلوس میں شرکت اور خطاب کیا۔ امیر جماعت اسلامی بلوچستان مولانا عبدالحق ہاشمی نے کوئٹہ میں نکالی گئی بڑی ریلی کی قیادت کی۔ نائب امیر جماعت اسلامی پروفیسر محمد ابراہیم، سینیٹر مشتاق احمد خان، سید بختیار مانی نے پشاور میں نکالے گئے بڑے جلوس سے خطاب کیا۔ گجرات میں امیر جماعت اسلامی شمالی پنجاب ڈاکٹر طارق سلیم جبکہ ڈپٹی سیکرٹری جنرل اظہر اقبال حسن نے رحیم یار خان میں نکالی گئی ریلیوں کی قیادت کی۔ جماعت اسلامی کے رہنما حافظ محمد ادریس نے سرگودھا میں ریلی کی قیادت کرتے ہوئے کشمیری بھائیوں اور بہنوں سے بھرپور اظہار یکجہتی کیا۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.