fbpx

لبنانی فوج کی امداد کیلئے 47 ملین ڈالرز کی منظوری

بیروت: لبنانی فوج کی امداد کیلئے 47 ملین ڈالرز کی منظوری ،اطلاعات کے مطابق امریکا افغانستان میں شکست کھانے کے بعد امریکا نے مشرق وسطیٰ اورعرب دنیا میں فوجی سرمایا کاری شروع کردی ہے ، یہ وجہ ہے کہ امریکی صدر جو بائیڈن نے لبنانی فوج کی امداد کیلئے 47 ملین ڈالرز کی منظوری دے دی۔

غیر ملکی میڈیا رپورٹس کے مطابق بائیڈن نے ایک میمورنڈم جاری کیا جس میں سیکریٹری آف اسٹیٹ اینتھونی بلنکن کو امریکی حکومت سے 25 ملین ڈالر اور وزارت دفاع سے 22 ملین ڈالرز وصول کرنے کی اجازت دی گئی تاکہ یہ رقم لبنانی مسلح افواج کی فوری امداد کیلئے دی جاسکیں۔

گزشتہ ہفتے امریکی سینیٹ کے ایک وفد نے بیروت کا دورہ کیا اور کئی عہدیداروں سے لبنانی افواج کو درپیش مسائل پر تبادلہ خیال کیا۔

خیال رہے کہ لبنان کو شدید معاشی بحران کا سامنا ہے ، مقامی کرنسی ڈالر کے مقابلے میں اپنی مالیت تقریباً کھوچکی ہے۔ گہری معاشی بدحالی اس کے استحکام کو خطرے میں ڈال رہی ہے۔ ورلڈ بینک نے اسے جدید تاریخ کا سب سے بڑا بحران قرار دیا ہے۔

غیر ملکی میڈیا رپورٹس کے مطابق بائیڈن نے ایک میمورنڈم جاری کیا جس میں سیکریٹری آف اسٹیٹ اینتھونی بلنکن کو امریکی حکومت سے 25 ملین ڈالر اور وزارت دفاع سے 22 ملین ڈالرز وصول کرنے کی اجازت دی گئی تاکہ یہ رقم لبنانی مسلح افواج کی فوری امداد کیلئے دی جاسکیں۔

گزشتہ ہفتے امریکی سینیٹ کے ایک وفد نے بیروت کا دورہ کیا اور کئی عہدیداروں سے لبنانی افواج کو درپیش مسائل پر تبادلہ خیال کیا۔

خیال رہے کہ لبنان کو شدید معاشی بحران کا سامنا ہے ، مقامی کرنسی ڈالر کے مقابلے میں اپنی مالیت تقریباً کھوچکی ہے۔ گہری معاشی بدحالی اس کے استحکام کو خطرے میں ڈال رہی ہے۔ ورلڈ بینک نے اسے جدید تاریخ کا سب سے بڑا بحران قرار دیا ہے۔