بلوچستان:بلوچ لبریشن آرمی کو دہشت گرد قرار دینے اورعام معافی کے بعد لاپتہ بلوچ واپس اپنے گھروں کو آنا شروع ہوگئے.

کوئٹہ:عین اس وقت جب ڈیفنس ہیومن رائٹس کی چیئر پرسن آمنہ مسعود جنجوعہ ڈی جی آئی ایس پی آر سے لاپتہ افراد کے حوالے سے بات چیت کررہی تھیں .وائس آف بلوچ مسنگ پرسنز کے چیئر مین نصراللہ بلوچ نے دوبارہ تصدیق کرتے ہوئے یہ پیغام دیا ہے کہ حکومت کی طرف سے عام معافی اور بلوچ لبریشن آرمی کو دہشت گرد قرار دینے کے بعد لاپتہ افراد نے اپنے گھروں کو واپس لوٹنا شروع کردیا ہے اور اب تک چند دنوں میں 12 لاپتہ افراد اپنے گھروں کو واپس لوٹ چکے ہیں.

دوسری طرف جسٹس ریٹائرڈ فضل الرحمٰن بازئی کی سربراہی میں لاپتہ افراد سے متعلق وفاقی حکومت کے کمیشن کوئٹہ میں کیسز کی سماعت کا آغاز کر چکا ہے۔کمیشن نے 24 جون سے مسلسل نو روز تک 122 کیسز کی سماعت کی تھی۔ بلوچستان کے وزیر داخلہ میر ضیا اللہ لانگو نے بھی یہ بتایا ہے کہ جنوری سے اب تک 200 لاپتہ افراد واپس اپنے گھروں کو لوٹ چکے ہیں۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.