ضمنی انتخابات۔ تحریک انصاف نے ووٹ خریدے ۔ باغی ٹی وی نے ثبوت حاصل کر لیے

0
25

بہاولنگر:ضمنی انتخابات۔ تحریک انصاف نے ووٹ خریدے ۔ باغی ٹی وی نے ثبوت حاصل کر لیے،ہارس ٹریڈنگ کے سب سے بڑے کھلاڑی عمران خان کی جماعت ضمنی الیکشن میں بھی ووٹ خریدنے لگی ضمنی الیکشن میں متوقع شکست دیکھ کر تحریک انصاف نے ووٹ خریدنے شروع کئے ہیں۔ جب پتہ چلا عوام ووٹ نہیں دیں گے تو پیسہ چل گیا ۔ دوسروں کو ضمیر فروش کہنے والے عمران خان کی پارٹی ووٹر کی سب سے خریدار نکلی۔ عمران خان کا دوہرا چہرہ باغی ٹی وی نے ایک بار پھر بے نقاب کر دیا ہے

اطلاعات کے مطابق پی پی 241 بہاولنگرسے ملنے والی اطلاعات میں بتایا گیاہے کہ ملک مظفر خان امیدوار تحریک انصاف حلقہ پی پی 241 کے دوران کمپین ضمنی الیکشن میں حلقہ ہذا میں لوگوں کو پیسے دے کر ووٹ خریدنے اور پی ٹی آئی قیادت کے حلقہ میں جلسے و کارنر میٹنگز پر کیے گئے

 

 

اطلاعات ہیں کہ بہاولنگر میں اس وقت ویسے تو انتخابی مہم ختم ہوچکی ہے لیکن اس سے پہلے پی ٹی ائی کے امیدوار ملک مظفر خان کے حوالے سے کہا جارہا ہےکہ وہ ووٹ خرید رہے ہیں ، جن لوگوں سے ووٹ خریدے گئے ان کے نام اور ان کو دی جانے والی رقم کا ریکارڈ باغی ٹی وی نے حاصل کرلیا ہے ،

یہ بھی کہا جارہا ہے کہ اس حلقے میں پاکستان تحریک انصاف کے امیدوار  کی طرف سے ووٹ خریدنے کا عمل اب بھی جاری ہے ، اس کے باوجود ان کیطرف سے ووٹ خریدنے کا معاملہ قابل غور ہے، باغی ٹی وی کو حاصل ہونے والی دستاویزات میں جو تفصیلات فراہم کی گئی ہیں انکے مطابق اخراجات کی لسٹ سامنے آئی ہے جس کی تفصیل درج ذیل ہے۔

 

1_سجاد اسلم ہاشمی مبلغ دو لاکھ روپے۔
2_عبداللہ وینس جلسہ خرچہ مبلغ ستائیس لاکھ روپے ۔
3_ندیم زمان شاہ ضلعی جنرل سیکرٹری جلسہ خرچہ مبلغ پندرہ لاکھ روپے.
4_ملک عبدالغفار سابقہ کونسلر مبلغ بیس لاکھ روپے۔
5_ جمع نقد میاں عاطف متیانہ مبلغ ڈیڑھ کروڑ روپے۔
6_ جمع نقد کاشف ثناء مبلغ ساڑھے تین کروڑ روپے۔
7_ انجمن تاجران رانا اظہر گروپ مبلغ پندرہ لاکھ روپے۔
8_عبدالرزاق رامے سابقہ چئیرمن بلدیہ مبلغ تیس ہزار روپے۔
9_ نواب مظہر لکھویرا مبلغ چار لاکھ روپے۔
10_نواب احمد حسن لکھویرا مبلغ چھ لاکھ روپے۔
11_ ایڈوانس بابت جلسہ سٹیڈیم مبلغ دس لاکھ روپے۔
12_عون عباس کو بھجوائے مبلغ ستر لاکھ۔
13_ پریس کو دیے بدست شیخ علی مبلغ نو لاکھ روپے۔
14_چوہدری طاہر چئیرمن مبلغ دس لاکھ روپے۔
15_ شاہ بہرام جوئیہ مبلغ سات لاکھ روپے۔

یاد رہےکہ جعلی ڈگری کیس میں نااہل لیگی رکن صوبائی اسمبلی کاشف محمود چوہدری کو الیکشن کمیشن نےڈی نوٹیفائی کردیا گیا تھا۔ذرائع کےمطابق الیکشن کمیشن نے کاشف محمود چوہدری کی پی پی 241 بہاولنگر سے کامیابی کا نوٹیفکیشن واپس لے لیا تھا

نوٹیفیکیشن کے مطابق اسلام آباد ہائیکورٹ نے کاشف محمود کی نااہلی کا فیصلہ 31 جنوری کو سنایا تھا۔کاشف چوہدری پی پی 241 سے ن لیگ کے رکن صوبائی اسمبلی منتخب ہوئے تھے۔ ان پر بی بی اے کی جعلی ڈگری الیکشن کمیشن میں جمع کرانے کا الزام تھا۔درخواست گزار عبدالغفار نے کاشف چوہدری کو 62 ون ایف کے تحت نااہل کرنے کی استدعا کی تھی۔

Leave a reply