چیئرمین سینیٹ کی تبدیلی بنی درد سر، اپوزیشن جماعتوں کا اجلاس پھر طلب

0
67

چیئرمین سینیٹ کی تبدیلی کے حوالہ سے اپوزیشن جماعتوں نے ایک بار پھر اجلاس طلب کر لیا

چیئرمین سینیٹ کی تبدیلی، ن اور پیپلزپارٹی کے اندر بغاوت کا خدشہ؟ اہم خبر

چیئرمین سینیٹ کو ہٹانے کی مہم اپوزیشن کو الٹی پڑ گئی، حکومت کا بڑا فیصلہ

باغی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی کے خلاف تحریک کو کامیاب بنانے کے لئے اپوزیشن جماعتوں کے سینیٹرز کا اجلاس اسلام آباد میں طلب کر لیا گیا ہے، اجلاس مسلم لیگ ن کے رہنما راجہ ظفر الحق کی صدارت میں ہو گا، اپوزیشن جماعتوں کے سینیٹرز کا اجلاس 18 جولائی کو طلب کیا گیا ہے

حاصل بزنجو، چیئرمین سینیٹ کے اپوزیشن کے متقفہ امیدوار،سینیٹر کب بنے؟

چیئرمین سینیٹ کے امیدوار پر اپوزیشن کا ہو گیا اتفاق،کون ہو گا نیا چیئرمین سینیٹ؟

واضح رہے کہ چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی کو ہٹانے کا فیصلہ اپوزیشن جماعتوں کی اے پی سی میں کیا گیا ، بعد ازاں رہبر کمیٹی نے فیصلے کی توثیق کی ، اپوزیشن جماعتوں نے میر حاصل بزنجو کو چیئرمین سینیٹ کا امیدوار نامزد کیا ہے جن کا تعلق بلوچستان سے ہے.

عدم اعتماد کی قراردار کے باوجود اپوزیشن کی چیئرمین سینیٹ کی زیر‌صدارت اجلاس میں شرکت

دو روز قبل مسلم لیگ ن کے سینیٹرز کا بھی اجلاس ہوا تھا جس میں ن لیگ کے صرف 19 سینیٹرز نے شرکت کی تھی ،بڑی تعداد میں سینیٹرز کی اجلاس میں عدم موجودگی پر اپوزیشن جماعتوں کو چیئرمین سینیٹ کی تبدیلی کی گیم الٹی ہوتی نظر آ رہی ہے اس لئے اپوزیشن جماعتوں کے سینیٹرز کا اجلاس دوبارہ طلب کیا گیا ہے.

 

دوسری جانب تحریک انصاف نے ڈپٹی چیئرمین سینیٹ سلیم مانڈوی والا کے خلاف عدم اعتماد کی تحریک جمع کروا دی گئی ہے، اس حوالہ سے تحریک انصاف نے اپنی اتحادی جماعتوں سے مشاورت شروع کر دی ہے .قراردادقائد ایوان شبلی فراز ،بلوچستان عوامی پارٹی ،فاٹا،پی ٹی آئی کےسینٹرز کی جانب سےجمع کرائی گئی

اپوزیشن نے صادق سنجرانی کو ہٹانے کی قرارداد اور سینیٹ کا اجلاس بلانے کی ریکوزیشن جمع کرائی۔ صادق سنجرانی کے خلاف تحریک عدم اعتماد کامیاب ہوئی تو نئے چیئرمین سینیٹ کے انتخاب کے لئے انتخاب خفیہ رائے شماری سے ہوگا۔ سینیٹ کا اجلاس 14 روز کے اندر بلایا جائے گا۔

واضح رہے اے پی سی کے بعد اپوزیشن رہنماﺅں کے ساتھ مشترکہ پریس کانفرنس کرتے ہوئے مولانا فضل الرحمان نے 25جولائی کو یوم سیاہ منائے جانے اور عوامی رابطہ مہم شروع کرنے کا اعلان کیا تھا جبکہ چیئرمین سینیٹ کو ہٹانے کا فیصلہ کیا گیا اور اے پی سی کے فیصلوں پر عمل در آمد کیلئے رہبر کمیٹی تشکیل دیدی گئی تھی۔ بعد ازاں 5 جولائی کو متحدہ اپوزیشن کی رہبر کمیٹی نے چئیرمین سینیٹ صادق سنجرانی کو عہدے سے ہٹانے کا حتمی فیصلہ کرتے ہوئے اس سلسلے میں چئیرمین سینیٹ کے خلاف تحریک عدم اعتماد کی قرارداد جمع کرانے کا اعلان کیا تھا۔

Leave a reply